بہار و سیمانچل

خانقاہ رحمانی کے سجادہ نشیں کو بنایا جائے امیر شریعت ، ممبران کی متفقہ اپیل

جموئی13جون(ہندوستان اردو ٹائمز) آج مورخہ ۸؍ جون ۲۰۲۱ء کو ضلع جموئی کے تمام ارباب حل وعقد کی ایک خصوصی مشاورتی نشست منعقد ہوئی، جس میں ارباب حل وعقد امارت شرعیہ کے مؤقر ممبران نے شرکت کی، اور تمام لوگوںنے اپنی رائے مجلس میں رکھی، سب سے پہلے امیر شریعت حضرت مولانا محمد ولی صاحب رحمانی رحمۃ اللہ علیہ کی خدمات کا تذکرہ ہؤا، ساتھ ان کے درجات کی بلندی کے لیے دعاء کی گئی، اور ان کی خدمات کو تازگی بخشنے اور متحد ہوکر ان کی فکر کوترقی دینے کا عہد کیا گیا، اورامارت شرعیہ حضرت رحمۃ اللہ علیہ کے کیے گئے فیصلوں کی تحسین کی گئی، کہ انہوں نے امارت شرعیہ کے لیے جواں سال عالم دین حضرت مولانا شمشاد صاحب رحمانی کو نائب امیر شریعت نامزد کیا،

یہ فیصلہ حضرت رحمۃ اللہ علیہ کی کرامت ہے، کہ انہوں نے بروقت یہ معاملہ کیا، اسی طرح خانقاہ رحمانی کی جانشینی اپنے لائق فرزند حضرت مولانا احمد ولی فیصل رحمانی صاحب کو سونپی، جو بے پناہ خوبیوں کے حامل ہیں، اور عالمی سطح پر تعلیمی ، تنظیمی اور رفاہی کاموںکا تجربہ رکھتے ہیں، اور بزرگوں کی امانتوں کے امین ہیں، انہیں اپنے والد ماجدؒ کی طرح دینی اور دنیا وی علوم پر اللہ نے ملکہ دیا ہے، جس سے ہم تمام لوگ بخوبی واقف ہیں، اور اللہ نے چاہا تو ان کی ذات سے ملک کا ہر طبقہ استفادہ کرے گا۔مجلس کے اخیر میں تمام لوگوں سے امارت شرعیہ کے آٹھویں امیر شریعت پر رائے لی گئی، اور تمام لوگوںنے متفقہ طور پر یہ فیصلہ کیا کہ امارت شرعیہ کے لیے خانقاہ رحمانی کے موجودہ سجادہ نشیں حضرت مولاناا حمد ولی صاحب رحمانی دامت برکاتہم سب سے موزوں اور لائق شخصیت ہیں، اس لیے ہم تمام ممبران حل وعقد امارت شرعیہ، امیر شریعت کے لیے حضرت مولانا احمد ولی فیصل صاحب رحمانی کا نام پیش کرتے ہیں، مجلس کا اختتام دعاء کے ساتھ ہؤا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close