بہار و سیمانچل

بحیثیت مومن ہمیں اللہ کی مرضی پرراضی رہناچاہیئے: مولاناعمرین محفوظ رحمانی

نوادہ (محمد سلطان اختر) امیرشریعت مفکراسلام حضرت مولاناسیدمحمدولی رحمانی نوراللہ مرقدہ کو خراج عقیدت پیش کرنےکیلئےتعلیمی مشاورتی کمیٹی امارت شرعیہ ضلع نوادہ کےزیراہتمام انصارنگر جامع مسجداورمکہ مسجدنوادہ میں تعزیتی اجلاس منعقد کیاگیااجلاس میں شہرنوادہ کےدانشوراورعلمائےکرام وامت کےدیگرکثیرافرادشریک ہوکر دعائے مغفرت کی اورعلمائے کرام کےخطاب سےاستفادہ کیااس موقع پرملک کی مشہور شخصیت سکریٹری آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ خلیفہ امیرشریعت حضرت مولاناعمرین محفوظ رحمانی دامت برکاتہم کےاہم پیغام کو جناب مولانا محمد نصیر الدین مظاہری صاحب نےسنایا،حضرت مولاناعمرین محفوظ رحمانی صاحب نےاپنےپیغام میں کہاکہ آج کایہ اجلاس حضرت امیرشریعت مولاناسیدمحمدولی رحمانی نوراللہ مرقدہ کی تعزیت کےسلسلے میں منعقدکیاگیاہے،سچی بات یہ ہیکہ حضرت کی رحلت سے پوری ملت غمزدہ ہے اوران کے سانحہ انتقال نےہرایک کو مغموم کردیاہےہم سب ایک دوسرے کی تعزیت کے مستحق ہیں یقینایہ مرحلہ ہم سب کیلئےصدمہ اورغم کاہے لیکن بحیثیت مومن ہمیں اللہ کی مرضی پرراضی رہناچاہیئے اورجانےوالےشخص کیلئےاللہ پاک سےرحمت کی اورمغفرت کی دعاء کرنی چاہئیے،ہمیں امیدہیکہ آپ تمام حضرت امیرشریعت رحمتہ اللہ علیہ کیلئے ایصال وثواب اور دعائے مغفرت کا اہتمام فرمائیں گے،جانےوالاجب دنیاسےرخصت ہوجاتاہےتودنیاں سے بھیجی جانےوالی نیکیاں اس کو تحفہ کی شکل میں ملا کرتی ہیں،اسلئےہم سب زیادہ سےزیادہ دعائے مغفرت کا اہتمام کریں اللہ تعالی مجھےاورآپ سب کو دین پراستقامت دےاورہم سب کو اللہ حسن خاتمہ کی دولت سےنوازےآمین مشہورومعروف شخصیت صدرتعلیمی مشاورتی کمیٹی امارت شرعیہ ضلع نوادہ حضرت قاری شعیب احمد مدظلہ ناظم مدرسہ عظمتیہ انصارنگرنےفرمایاشیخ طریقت مرشد امت مسیحاقوم وملت مفکر اسلام امیرشریعت حضرت مولانامحمد ولی رحمانی نوراللہ مرقدہ کےجانےسےعالم اسلام کاہرفرداپنےکویتیم محسوس کررہاہےیقیناآج عالم اسلام کاہرفردیتیم ہوگیا، میراتعلق امیرشریعت رابع مولانامنت اللہ رحمانی نوراللہ مرقدہ سےبھی رہااورامیرشریعت سابع مولاناولی رحمانی نوراللہ مرقدہ سےبھی میرا قدیم تعلق ہے،آج آپ کی شجاعت دلیری حاضرجوابی اوربہت سی باتیں یادآرہی ہیں اوردل مغموم ہو تا جارہاہے یقینا ان کےجانےسےمیں ذاتی طورپر اپنےکویتیم محسوس کررہا ہوں ،جب بھی کوئی معاملہ آتا حضرت سے بات ہوتی رہنمائی فرماتےدل کو سکون ملتا،اب کون ہےجس کی نظرہرچہار جانب ہواورامت کی رہنمائی مسیحابنکرکرے یقینا حضرت صاحب مفکراسلام تھے ہمہ وقت اسلام کی فکر کی ہرزمانےمیں جہل اور علم کی جنگ ہوئی ہےآدم علیہ السلام سےلیکرسیدالانبیاوالعلماءمحمد عربی صل اللہ علیہ وسلم تک آپ کےبعدآپ کےواثین علماء میدان عمل میں نظرآئےانہیں علماء حق میں مفکراسلام کااسم گرامی سنہرے حروف سےلکھا ہواہے،حضرت کی پوری زندگی پرنظرڈالیں تو یہی نکل کرسامنےآئےگاکہ امت کی فکر اسلام کی فکر انسان کی فکر لیکرمیدان عمل میں ڈتے اور جمےہوئےہیں حکومتوں کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کرباتیں کرنامفکراسلام کوخوب آتاتھااللہ حضرت پررحمتوں کی بارش فرمائےآمین،جنرل سکریٹری تعلیمی مشاورتی کمیٹی امارت شرعیہ ضلع نوادہ جناب قاری مقصود احمدنعمانی امام جامع مسجد انصار نگر نے کہاکہ حضرت امیرشریعت نے اپنےدور امارت میں امارت شرعیہ کےذریعہ امیرشریعت رابع کی طرح نمایاخدمات انجام دی ہےپانچ سالہ دورامارت میں ہرچہار جانب امارت شرعیہ کے پیغام کوگھرگھرپہونچایا،امیر شریعت اس خاندان کے وارث آمین تھےجوحق گوئی میں مشہورومنفردخاندان ہے،باتوں کو دلیل اور سلیقہ سےرکھنےمیں منفردشناخت کےمالک تھے قاری شوکت مظاہری نےکہاعالم کی موت عالم کی موت ہے آج امیرشریعت ہمارے درمیان سےرخصت ہوگئے ہم سب اپنےکوعجب مشکل میں محسوس کررہےہیں حضرت والابالکل سادےاندازمیں علم وعمل کی گفتگوفرماتےتھے حضرت کی تقریروقت اورحالات کےمطابق ہوتی تھی جناب قاری شہادت حسین قاسمی نے کہابندہ نےحضرت کی تربیت میں جامعہ رحمانی کی چہاردیواری کےاندروقت گذاراہے ایسی شخصیت صدیوں میں آیاکرتی ہیں ،فی الوقت ملک ایسامفکرقائدسےخالی نظرآرہاہے آپ کی شخصیت عالمی تھی عالم اسلام کی رہنمائی فرمایا کرتے تھےاللہ غریق رحمت فرمائےجناب قاضی ضیاءالدین مظاہری نےکہابندہ کابچپن جامعہ رحمانی میں گذراہے اوربہت قریب سےاس وقت ہم نےحضرت کودیکھااورپڑھاملک کےحالات جیسےبھی ہوں حضرت گھبراتے نہیں تھےبلکہ ڈت کرمقابلہ کرتےاورامت کوڈتےاورجمےرہنےکاسلیقہ سکھاتےتھےملک میں لوک ڈاؤن جیسے ہی ختم ہوا،امت کی اصلاح اورامت کےفائدہ کیلئے سفردر سفرشروع کردیا،اورآج ایک لانبےسفرپرروانہ ہوگئےاللہ ہم سب کیلئےان جیساکوئی بدل مہیافرمائےآمین جناب مولانا محمدنصیرالدین مظاہری معاون سکریٹری دفترنظامت امارت شرعیہ پھلواری شریف پٹنہ نےفرمایاآج دل بےقرارہےحضرت ایسےسفرپرروانہ ہوئے جہاں سےواپسی ممکن نہیں ،حضرت کےانتقال سےامت کاجوبھی نقصان ہوالیکن میراذاتی بڑا اورناقابل تلافی نقصان ہوا امیرشریعت سابع ملت اسلامیہ کیلئے ایک سائبان کی حیثیت رکھتے تھے،جس دور اندیشی باریک بینی اور حسن تدبیرکے ذریعہ امت کی رہنمائی کی ہےوہ قابل رشک ہے،حضرت صاحب امارت شرعیہ بہاراڈیشہ وجھاکھنڈکے امیرشریعت ،مسلم پرسنل لاء بورڈ کے جنرل سکریٹری جامعہ رحمانی اور خانقاہ رحمانی رحمانی 30 رحمانی فاؤنڈیشن کے روح رواں اس کےعلاوہ سینکڑوں مدارس کالج کےسربراہ و سرپرست تھے حضرت کاانتقال ایسے نازک وقت میں ہواجب کہ اس وقت رہنمائی کی ضرورت پہلے سے زیادہ ہے آج ملت اسلا میہ عجیب دورسے گذر رہاہے عالم اسلام کو مفکراسلام جیسا بے باک،جرات مند قائد کی سخت ضرورت ہےاللہ ان کا بہتربدل عنایت کرے ہم سب ارادہ کریں کہ ان کے بتائے کاموں کوآگے بڑھائیں گے،خانقاہ رحمانی جامعہ رحمانی اور بزرگوں کی امانت امارت شرعیہ پھلواری شریف پٹنہ سےویساہی محبت قائم رکھیں گےجیساحضرت کی زندگی میں تھاامیرشریعت مولانامحمد ولی صاحب کا انتقال ہواہےلیکن ان کامشن ان کا ادارہ ان کی تعلیمات زندہ ہیں اوران شاءاللہ پہلےہی کی طرح حضرت کےہرمشن کو کامیابی کےساتھ ہم سب ملکرآگےبڑھاتے رہیں گے۔ نوادہ کی مشہور شخصیت جناب مولانااقبال احمدصاحب نےکہا اصل تعزیت یہ ہے کہ ان کے نہج کو باقی رکھتے ہوئے ان کے کام کو آگے بڑھایا جائے، اور انہوں نے جس کام کو، جن کے حوالے کیا،ان پر اعتماد کرکے ان کے مشن کو تیزی سے آگے بڑھانا ہم سب اپنی ذمہ داری محسوس کریں،حضرت آخری وقت میں جومشن جاری کیاتھاتعلیمی مشن اسکوآگےبڑھاناہم سب کی ذمہ داری ہےتاکہ ہمارے معاشرےسےدینی تعلیم دورنہ ہوہربچہ دینی تعلیم سےآراستہ ہو،اجلاس میں جناب برکت اللہ خان ایڈوکٹ مولاناطیب قاسمی مفتی معراج قاسمی الحاج عبدالرحیم مولاناعبدالقادر وغیرہم نے خطاب کیامجلس میں مولاناابوطلحہ مظاہری مولانا ابوالکلام قاسمی ماسٹرعلی حیدرحافظ منظورالحاج نقیب الرحمن حافظ حسان حافظ محمودالحسن حافظ کیفی حافظ انس وغیرہم نےبطورخاص شرکت کی اجلاس کاآغازحافظ محمودالحسن کی تلاوت اور حافظ منظوراحمدکی نعت سےہواجبکہ نظامت قاری شہادت حسین قاسمی نےکی،رپورٹ ابو طلحہ مظاہری مدرسہ عظمتیہ انصارنگرنوادہ

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close