بہار و سیمانچل

نوجوانوانان خانپور نے گلناز کے ساتھ ہوئے درندگی کے خلاف کینڈل مارچ نکالا

مظفرپور:22 /نومبر(پریس ریلیز ) گلناز کے ساتھ ہوئے درندگی کے خلاف تھوڑی پنچایت خانپور کے نوجوانوں نے کینڈل مارچ نکالا اس موقع پر محمد فیصل نے کہا کہ ویشالی کی گلناز پروین کو جس طرح چھیڑخانی کے بعد آگ میں جلایا گیا، اس نے ملک کے اجتماعی ضمیر کو جنجھوڑ کررکھ دیا ہے۔سب سے حیرت کی بات تو یہ ہے کہ 20دن گزرجانے کے باوجود بھی پولس سبھی مجرمین کو گرفتار کرنے میں ناکام رہی ہے۔موصوف مذید کہاکہ 20سالہ گلناز ایک یتیم لڑکی ہے جس کا فائدہ اٹھا کر گاؤں کے چند سماج دشمن عناصرنے اس کے ساتھ زیادتی کی اور نہ ماننے پر جلا کر مارد یا۔
محمد ریحان نے اس سانحے پر شدید افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اسے مہذب سماج کے لیے ایک بدنما داغ سے تعبیر کیا ہے۔ چاہے یہ واقعات کسی بھی طبقے کے ساتھ ہوں، ان کے مرتکبین ساری انسانیت اور سارے سماج کے دشمن ہیں۔اگرسماج کا کوئی فرد کسی مجرم کا دفاع اس لیے کرتاہے کہ وہ اس کی ذات یا برادری سے تعلق رکھتا ہے تو اس کا یہ عمل انتہائی افسوس ناک اور حقیر ترین ہے۔
انہوں نے وزیر اعلی نتیش کمار سے مطالبہ کیا ہے کہ اس واقعہ کا نوٹس لیں اور مجرموں کو کیفرکردار تک پہنچانے کے لیے فاسٹ ٹریک کورٹ میں مقدمہ چلایا جائے، نیز اہل خانہ کو پچاس لاکھ روپے معاوضہ اور سرکاری نوکری دی جائے۔ ساجد اسمعیل نے وزیر اعلی سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ گلناز معاملہ کی پردہ پوشی کرنے پولس انتظامیہ کے خلاف بھی سخت کارروائی کی جائے،محمد دانش صدیقی، محمد معراج،شاہنواز، معروف،اور راہل وغیرہ نے بھی خطاب کیا

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close