بہار و سیمانچل

نجمہ خاتون 15 نومبر سے لاپتہ، سکندرا پولیس نے اس معاملے کاروائی کرنے میں کیا آنا کانی۔۔۔

جموئی (محمد سلطان اختر ) جموئی ضلع کے تحت مہادیو سمریہ گاؤں کی نجمہ خاتون بنت مرحوم اصغر میاں گاؤں پوسٹ مہادیو سمریہ تھانہ سکندرہ ضلع جموئی کی رہائشی جس کی شادی خانہ آبادی مہادیو سمریہ میں ہوئی تھی ، شوہر محمد افضل مہادیو سمیریا پولیس اسٹیشن سکندرہ ضلع جموئی ہے، نجمہ کے چچا محمد ممتاز اور نجمہ کے شوہر محمّد افضل کے مطابق لڑکی کو بھگا دیا گیا ہے۔ افضل سے ساڑھے تین سال قبل شادی ہوئی تھی دونوں نے رضا مندی ہنسی خوشی کے ساتھ شادی کی تھی لیکن ایک ہفتہ قبل نجمہ غائب کیوں ہوئی؟ نجمہ کے اہل خانہ سخت پریشان ہیں 15 نومبر کو نجمہ قریب دن کے 10 بجے اس نے اپنی ماں کو بتایا کہ ہم بیوٹی پارلر جا رہی ہوں، کچھ گھنٹوں کے بعد اس کا موبائل بند ہو گیا ، جب نجمہ شام نہیں آئی تو لوگ اسے ڈھونڈنے لگے ، نجمہ کے بچپن کی سہیلی زینت کا کہنا ہے کہ اس کی شادی افضل سے ہوئی ہے مگر اسے دوسرا لڑکا بھی چاہتا ہے ، نام کا ذکر کیے بغیر زینت نے کہا کہ ایک لڑکا ہے جو کہہ رہا ہے شوہر کو طلاق دلوا دو نجمہ آجائیگی، اگر افضل نجمہ کو طلاق دے دے تو ہم اسے دستیاب کردیں گے ، زینت نے یہ سب باتیں گاؤں والوں کے درمیان انجام دیا پھر افضل کی بہن اور نجمہ کی بہن کو موبائل فون پر بتایا کہ نجمہ کی افضل سے علاحدگی کروا دو میں نجمہ کو حاضری کر دونگی، جو زینت کے موبائل ریکارڑ سے نکالا جا سکتا ہے یہ زینت کا نمبر ہے۔ 8210300104 ، یہ زینت کا نمبر ہے جو نجمہ کی بچپن کی دوست ہے زینت پروین اب یہ کہتے ہوئے انکار کرتی ہے کہ اس لڑکے نے بات نہیں کی بلکہ پیغام دیا تھا ، اس لڑکے سے بات نہیں کی تھی ، زینت بھی مہادیو سمیریا کی ہی رہائشی ہے لیکن پھر بھی کوئی انکشاف نہیں ہوا ہے نجمہ خاتون بھی ایک موبائل رکھتی تھی جس کا نمبر یہ 8697348415 ہے۔ سکندرہ تھانے میں 17 تاریخ کو لاپتہ ہونے کا ایف آئی بھی درج ہوچکا ہے لیکن ابھی تک ایس ایچ او کچھ بھی کہنے سے انکار ہے ، اتنا لمبا عرصہ کیوں لگ رہا ہے ؟ کیا نجمہ کو ہلاک کر دینے کا اِنتظار ہے، اس کا نمبر ٹریس کرکے مجرم پکڑے جا سکتے ہیں؟ نجمہ کے اہل خانہ اور اس کے شوہر نے انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ جلد سے جلد ہماری نجمہ کو ہمارے درمیان لائیں ، اگر وہ کسی سے پیار کرتی ہے تو وہ واضح طور پر بتائے گی،تو ہم اسے بھی آزاد کردیں گے ، لیکن کم از کم وہ ہمارے سامنے تو آئے، یہ معاملہ اب محبت کا ہے یا عشق کا ہے یا اغوا کا ، انتظامیہ نے جواب دینے سے اب تک انکار کیا ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close