بہار و سیمانچل

مظفرپور: مرکزی حکومت کے خلاف عوام میں غم و غصہ کی لہر، محنت کشوں کی ہڑتال، کسانوں نے کیا زبردست احتجاج

مودی سرکار کمپنی راج نافذ کرنے کے لئے آئین اور جمہوریت کو ختم کررہی ہے تاکہ احتجاج میں اٹھائی جانے والی آواز کو کچل دیا جاسکے: منوج کمار یادو

مظفرپور:26/نومبر (پریس ریلیز)کون بنایا ہندوستان ، ملک کا مزدور کسان ۔ مودی سرکار مزدوروں ، کسانوں پر حملہ اور غلام بنانا بند کرو ، 4 مزدوری کوڈ ، 12 گھنٹے ورک آرڈر اور 3 زرعی قوانین منسوخ کرو، مودی حکومت ریل ، بینک ، ملک فروخت کرنا بند کر و،نجکاری بندکرو، -اڈانی – امبانی کمپنی کا قانون نافذ کرنا بند کردو، جمہوریت اور آئین پر حملہ کرنا بند کرو ، ریکارڈ توڑنے والی بے روزگاری اور مہنگائی پر روک لگاؤ جیسے فلک شگاف کے ساتھ مزدرو تنظیم ایکٹو(سی پی آئی ایم ایل) سمیت مرکزی سینٹرل لیبر تنظیموں میں انڈین نیشنل ٹریڈ یونین کانگریس (آئی این ٹی سی یو) ،آل انڈیا ٹریڈ یونین کانگریس (اے آئی ٹی یو سی ) ، ہند مزدور سبھا (ایچ ایم ایس) ، سینٹر فار انڈین ٹریڈ یونینز(سی آئی ٹی یو ) ، آل انڈیا یونائٹیڈ ٹریڈ یونین سنٹر (اے آئی یو ٹی یوسی )،ٹریڈ یونین کوآرڈی نیشن سینٹر(ٹی یو سی سی)،سیلف ایمپلائڈ وومینس ایسو سی ا یشن(ایس ای ڈبلیواے کے مشترکہ ملک گیر ہڑتال کے تحت مظفرپور میں بھی ایکٹو (سی پی آئی ایم ایل)نے اپنے ضلعی دفتر واقع ہری سبھا چوک سے جلوس نکالا، جلوس کلیانی،موتی جھیل،اسٹیشن روڈ، صدر اسپتال ،کمپنی باغ ہوتے ہوئے ضلعی مجسٹریٹ آفس کے سامنے پہنچ کر اجلاس میں تبدیل ہوگیا اس موقع پر ایکٹو کے ضلعی کنوئینر منوج کمار یادو نے کہا کہ آج مودی حکومت ملک کو ان مجرموں کے حوالے کرنے جارہی ہے جنہوں نے بینکوں ، کارپوریٹ ہاؤسز میں عام لوگوں کی محنت ، کمائی کی لاکھوں اور لاکھوں روپے لوٹ لی ہیں۔ جس کی وجہ سے پہلے ہی کروڑوں بینک ، معیشت اور ریکارڈ توڑنے والی بے روزگاری لاکھوں افراد کو خود اور خود غلامی کی طرف دھکیل دیا جائے گا۔ ریل ، بینک اور ملک کے اثاثے نجی طور پر بیچنے والے ، نجکاری کو توڑنے ، ریکارڈ توڑنے ، بے روزگار اور افراط زر کی افادیت سے دوچار ہے۔ انہوں نے آج کی ملک گیر ہڑتال کو کامیاب بنانے کے لئے تمام مظاہرین کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اس سے بھی بڑی لڑائیوں کے لئے تیار رہنے کو کہا۔ کسان مہاسبھا کے ضلعی سیکریٹری سترودھن سہنی نے کہا کہ مرکز میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی زیرقیادت حکومت عوام دشمن پالیسیاں نافذ کررہی ہے اور عام لوگوں کے خلاف فیصلے لے رہی ہے۔ انہوں نے کم سے کم پنشن ، کم سے کم اجرت ، تمام کارکنوں کو معاشرتی دائرے میں لانے اور مساوی تنخواہ کے نظام کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے حالیہ مزدور اصلاحات کی بھی مخالفت کیا۔ ان کا الزام ہے کہ وہ مزدوروں کے مفادات کو نقصان پہنچائیں گے۔ دوسری جانب حال ہی میں منظور کردہ تینوں زرعی قوانین کو واپس لینے کا مطالبہ کیا اس موقع پر انصاف منچ بہار کے ریاستی ترجمان اسلم رحمانی، محمد شفیق الرحمن، پرشو رام پاٹھ محمد کریم کے علاوہ سیکڑوں کی تعداد میں مرد و خواتیں شامل ہوئے ۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close