بہار و سیمانچل

نوادہ ضلع کے پانچوں اسمبلی حلقوں پر رائے دہندگان نے امن و امان کے ساتھ اپنا اپنا ووٹ ڈالا

نوادہ (محمد سلطان اختر) بہار اسمبلی انتخابات کے پہلے مرحلے کا انتخاب شروع ہوگیا ہے جس میں نوادہ ضلع کے پانچ اسمبلی حلقہ میں امن اور ہم آہنگی پانچ حلقوں میں ووٹ پولنگ ہوئی۔ صرف ایک حادثہ ہوا جس میں بی جے پی کے پولنگ ایجنٹ ہسوا اسمبلی حلقہ کے پھلوا گاؤں کے بوتھ نمبر 258 میں دل کا دورہ پڑنے سے انتقال ہو گیا، اور دوسری طرف رجولی اسمبلی حلقہ کے 2 گاؤں میں گاؤں والوں نے ووٹ کا بائیکاٹ کیا،

اِدھر گووند پور اسمبلی حلقہ اور وارث علی گنج اسمبلی حلقہ میں ہمارے نمائندے محمد سلطان اختر از خود متعدد بوتھوں کا جائزہ لیا جس کی تعداد اور ووٹنگ فیصد مندرجہ ذیل ہیں،

بوتھ نمبر 300 پر ،پولنگ آفیسر محمد فیاض الدین کو یہاں 56 فیصد ووٹ دیا گیا ،
بوتھ نمبر 320 میں پولنگ آفیسر محمد علاؤالدین انصاری 54 فیصد رائے شماری ہوئی

بوتھ نمبر 318 پولنگ آفیسر راجیو کمار کے 45 فیصد ووٹنگ ہوئی۔
بوتھ نمبر 318A پولنگ آفیسر وجے دیو یہاں 41 فیصد ووٹنگ ہوا۔
319 پر پولنگ آفیسر سنجے کمار یہاں 48 فیصد ووٹنگ ہوئی۔
319 A پولنگ افسر انیل کمار چو بے یہاں 46.5 فیصد ہوئی

بوتھ نمبر 308 پولنگ افسر وجے کمار سین یہاں پولنگ 30 فیصد ہوئی

سنجے پرکاش پولنگ افسر کے بوتھ نمبر 308 پر 36 فیصد ووٹنگ ہوئی۔
309 پولنگ آفیسر راکیش کمار شرما یہاں 40 فیصد ووٹنگ کی۔
بوتھ نمبر 327 پولنگ آفیسر جین کمار ورما یہاں 40 فیصد رائے شماری ہوئی۔
بوتھ نمبر 327a پولنگ آفیسر سریش رویداس یہاں 42 فیصدووٹ ڈالے گئے

بوتھ نمبر 328 پولنگ آفیسر امت کمار یہاں 44 فیصد ووٹ دیا گیا۔
بوتھ نمبر 329 پولنگ افسر ارون کمار ورما یہاں 42 فیصد ووٹ ڈالے گئے۔
بوتھ نمبر 330 پولنگ افسر دلیپ کمار 45 فیصد رائے شماری کی گئی

ہمارے نمائندے پانچوں اسمبلی حلقوں کا ملا جلا مواد نکالنے کے بعد جو حل نکالا وہ مندرجہ ذیل ہیں

گووند پور 56.6 فیصد
نوادہ 56 فیصد
وارث علی گنج 51.3 فیصد
رجولی 49.77 فیصد
ہسوا 48.53 فیصد نکالا ہے،
ہمارے نمائندے خود سے جاکر اپنا جائزہ لیا،تمام حلقوں میں گووند پور اسمبلی حلقہ پولنگ کا فیصد بہترین رہا اور سب سے کم پولنگ فیصد ہسوا اسمبلی حلقہ میں ہوا۔
متعدد بوتھوں پر 50 فیصد سے نیچے رائے شماری کی گئی جس میں بیلکھنڈا پنچایت کے جمھریا گاؤں کے 308 بوتھ نمبر پر 30 فیصد ہی پولنگ ہوئی،راۓ دہندگان سے پوچھے جانے پر ہر برادری اور ہر لوگوں سے پوچھا گیا کہ آپ نے کس کو ووٹ دیا؟ ووٹنگ کے بعد مکمل تحقیقات کے کرنے سے پتہ چلا کہ عظیم اتحاد کو ہی رائے دہندگان نے ووٹ دیا ہے،اکثریت عظیم اتحاد کی طرف ہے، جائزے کے باعث ہر طرف سے ووٹ مل رہے ہیں۔ کامران ملک اور ستیش کمار عرف منٹن سنگھ اس دور میں بہت آگے ہیں ، جب کہ ہمارے نمائندے محمد سُلطان اختر نے گووند پور اور وارث علی گنج اسمبلی حلقہ کے 2 اسمبلی حلقہ کا مکمل دورہ کیا، اور نچوڑ نکالا ہسوا اسمبلی حلقہ اور رجولی اسمبلی حلقہ اور نواده شہر تین اسمبلی سے یہ خبریں آرہی ہیں کہ لوگوں نے مہاگٹھ بندھن کے مفاد میں ووٹ ڈالے ہیں۔لوگوں کو تبدیلی کی ضرورت ہے اور بہار کا مکھیا بدلنا چاہتا ہے۔
ہمارے نمائندے کے ساتھ محمد کمال انصاری بطور کیمرہ مین موجود تھے۔ رائے دہندگان نے ہر طرف امن اور ہم آہنگی کے ساتھ اپنا ووٹ ڈالا کہیں سے کوئی ناخوشگوار واقعہ کی رپورٹ نہیں آئی ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close