بہار و سیمانچل

جامعہ فرقانیہ ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر ٹرسٹ منسرا کے زیراہتمام غریبوں کے درمیان 660 راحتی پاکٹ کیاگیا تقسیم

دربھنگہ 24مئ 2020(ممتازاحمدحذیفہ) کورونا وائرس جیسی مہلک وبا سے پوری عالمی طاقتیں اس وقت پریشان ہیں، دنیا کی معیشت یکا یک دھراشاہی ہو گیا ہے، اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے غریب، مزدور اور لاچار و بے بس اور بیوگان فاقہ کشی کے شکار ہیں ۔اس نفسی نفسی کے عالم میں کچھ لوگ بے سہارا اور مجبور لوگوں کی مدد کے لئے آگے آ رہے ہیں ایسے لوگوں کی جان و مال کی اللہ تعالیٰ حفاظت فرمائے ۔

بہار کے متھلاانچل کا علاقہ خط غربت و افلاس کا ہے یہاں کے بیشتر لوگ دہلی ، ممبئی پنجاب وغیرہ میں نوکری کر کے اپنی زندگی کسی طرح گذر بسر کرتے ہیں لیکن یکا یک پورے ملک میں لاک ڈاؤن نافذ کرنے اور پھر بار بار اس میں توسیع کی وجہ سے یہاں کی غریب عوام بھوک اور فاقہ کشی کا شکار ہے، کچھ فلاحی تنظیموں کی جانب سے راحتی اشیاء وغیرہ کام انجام دیا جا رہا ہے جس سے مجبور و لاچار لوگوں کو تھوڑی سی راحت مل جاتی ہے اور ان چہروں پر چند ساعت کے لئے مسکان آ جاتا ہے ،اسکے مد نظر۔

جامعہ فرقانیہ ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر ٹرسٹ منسرا کے زیراہتمام غریبوں مسکینوں اور بے سہارابیوا اورمعجوروں کے درمیان 660 راحتی اشیاء پاکٹ کے ساتھ ہر فرد کو 300تین سو روپیہ دیاگیا۔منسرا بڑگاٶں۔ کہوا کے علاوہ 16 گاٶں میں تقسی کیاگیا۔قاری صاحب نے اپیل کی کہ آپ حضرات دعاکریں۔جن حضرات نے اس میں جان مال سے مدد کیا ہے اللہ ان سبھی کو تمام مصیت وبلا سے محفوظ رکھے اور صحت مند رکھے اور .ایمان کےساتھ رکھے آمین۔

قاری ولی اللہ صاحب نے بتایا کہ ہم نےہندومسلم غریب مزدور اور بیواؤں کے علاوہ خصوصا اس غریب علماءاکرام کو بھی دیاجو پریشان ہیں.قاری محمدولی اللہ بانی جامعہ فرقانیہ طیب نگر منسرا کے شانہ بشانہ تمام احباب نے ملکر اس کام کو انجام دیا۔جناب عتیق اللہ صاحب منسرا۔مولانا وقاری وصی اللہ ہاشمی مہتمیم جامعہ ہذا ۔مولانا وقاری اشفاق صاحب استاذ شعبہ حفظ جامعہ ہذا۔مولانا وقاری مظفرحسین ہاشمی استاذ شعبہ قرأت جامعہ ہذا۔مولانا ریاض احمد اشاعتی استاذ شبعہ دینیات جامعہ ہذا ۔جناب رضوان بھاٸ عرف جگنوبابو۔مولاناابو سعید قاسمی صاحب .جناب مسعود صاحب۔حافظ امداداللہ رحمانی.حافظ عبیداللہ رحمانی۔ستارے ابن مولوی مرشد صاحب ۔ حافظ ممتاز احمد

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close