بہار و سیمانچل

اقلیتی غریب پر ظلم کی انتہا گھر کو توڑ کر مسمار کردیا گیا

نوادہ (محمد سلطان اختر) نوادہ ضلع کے تحت پکری برانوان بلاک کے دترول کے کورہیتا گاؤں کا رہائشی محمد شمس عالم عرف كلو میاں ہے ، جو برسوں سے تن تنہا،اکلوتا مسلم ہے جو کوریٹا گاؤں میں رہ رہا ہے۔ کرہہتا گاؤں کا ہی چننو سنگھ ، راجیو سنگھ اور اس کے ساتھیوں نے ان کا گھر مسمار کردیا۔ اور یہاں تک دھمکی بھی دی کہ تم یہاں سے بھاگ جاؤ ، ورنہ انجام برا ہوگا، تم اکیلے ہی میرے گاؤں میں رهکر ہٹلری دیکھاتا ہے،تم ہم لوگوں سے خوفزدہ کیوں نہیں ہو، تم ہمارے گاؤں میں اپنا روب دکھا رہے ہو،اکیلے رھکر اپنی بہادری کا مظاہرہ کررہے ہو، تم کو زندہ جلا دیں گے، تم کو ہم یہاں دیکھنا نہیں چاہتے ، اور اسی درمیاں کلو میاں کے مکان کو منہدم کردیا گیا ، اور اسے جان سے مارنے کی دھمکی بھی دے دی گئی ، حالانکہ گاؤں کے کچھ لوگ اسے بچانے میں بھی کامیاب ہوگئے ، جس سے اس کی جان بچ گئی۔ معاشرے میں اچھے لوگ بھی رہتے ہیں، لیکن چنّو سنگھ اور راجیو سنگھ ہمیشہ سماج دشمن عناصر سے ملکر آپسی بھائی چارے کو بگاڑنا چاہتا ہے،کلو میاں ، جو ایک غریب اقلیت میں سے آتے ہیں انکے گھر کو تباہ کرکے مسمار کردیا ہے،اسے بار بار کہا جا رہا ہے کہ تم یہاں سے چلے جاؤ ، ورنہ تم کو قتل کر دینگے کلو میاں نے بھی پکری برانواں پولیس اسٹیشن میں درخواست دی لیکن ابھی تک کوئی کاروائی عمل میں نہیں آئی ہے ، جو افسوس ناک ہے، یہ واقعہ 14 مئی 2020 کا ہے اور اب تک اس پر کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے۔انتظامیہ بھی اس سلسلہ میں مون ہے، اس سے پہلے بھی اقلیتی گاؤں میں اس نوعیت کا واقعہ ہو رہا ہے، اور اقلیت پر ظلم و ستم ہوتا رہا ہے۔ حکمرانی ایک تماشا بنتی رہتی ہے،انصاف کا دور دور تک نام و نشان نہیں ہے، اس کرونا وبائی امراض میں لوگ پریشان ہیں،ادھر غریب لوگوں پر دشمن عناصر دادا گیری کرنے میں لگے ہیں۔کلو میاں اور اُنکے لواحقین انصاف کی استدعا کر رہے ہیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close