بہار و سیمانچل

تمام ضروری سامان کی قیمتیں آسمان کو چھونے لگی ہیں اور بحران کی اس گھڑی میں عام لوگوں کا استحصال کیا جارہا ہے : آفتاب عالم

مظفرپور:24/مارچ (پریس ریلیز ) لاک ڈاؤن کے درمیان ضروری سامان کی بلیک مارکیٹنگ کی جارہی ہے ، جو انتہائی قابل مذمت ہے۔ حکومت کو چاہئے کہ وہ اس پر فوری کارروائی کرے اور بلیک مارکیٹنگ کو روکے۔ ان خیالات کا اظہار انصاف منچ بہار کے ریاستی نائب صدر آفتاب عالم نے کیا انہوں مذید کہاکہ حکومت نے کورونا وائرس سے ریاست کو محفوظ رکھنے کے لیے لاک ڈاؤن کا نفاذ کی ہے لیکن عالم یہ ہے کہ تمام ضروری سامان کی قیمتیں آسمان کو چھونے لگی ہیں اور بحران کی اس گھڑی میں عام لوگوں کا استحصال کیا جارہا ہے۔آفتاب عالم نے مطالبہ کیاہے کہ مرکزی اور ریاستی حکومت غریبوں کے لئے بنیادی چیزوں کی فراہمی کرے ، مزدوروں اور کمزور طبقات کو راشن اور دیگر ضروری سامان کی فراہمی کی ضمانت کرے۔ شہری اور دیہی علاقوں کے غریبوں کےلئے کم از کم تین ماہ کا راشن مہیا کرنا چاہئے۔ سینیٹائزر ، ماسک اور صابن غریبوں میں بانٹنا چاہئے۔ مزدوروں ، کسانوں ، چھوٹے تاجروں اور غریب افراد کے روزگار کے نقصان کی تلافی کے لئے مناسب منصوبہ بندی کی جائے انہوں نے کہا کہ حکومت کی بد نظمی کی وجہ سے عام زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی ہے لاک ڈاؤن کی وجہ کتنے لوگ راستے ہی میں پھنسے ہوئے ہیں آمدورفت کے سارے خدمات معطل کردی گئی ہیں کہنے کو تو حکومت نے اعلان کیا ہے کہ ضرورت کی چیزیں دستیاب رہیں گی ، میڈیکل، اسٹور راشن دکان بینک اے ٹی ایم دودھ کی دکان سبزی کی دکان، ہسپتال وغیرہ کھلے، رہیں گے لیکن ایک جگہ سے دوسری جگہ گاڑی کا آنا جانا بند ہے تو بھلا یہ ساری چیزیں کیسے دستیاب ہوں گی یہاں تک کہ ضروریات کی سامانے بھی بھی دستیاب نہیں ہو پا رہی ہیں ایسے حالت میں یومیہ مزدوری کرنے والا غریب اپنا اور اپنے بال بچوں کے پیٹ بھرنے کے لیے کیا کرے سب کام بند ہیں ان کے بچے بھوک سے بلک رہے ہیں کوئی پرسان حال نہیں مرکزی و صوبائی حکومتوں کو چاہیے کہ اللہ پلاننگ کےساتھ غریب افراد کے گھروں میں راشن بھجوانے کا بندوبست کریں وہیں آفتاب عالم نے اس وقت مختلف شہروں میں حکومت کی طرف سے لوک ڈاؤن کا اعلان کیا جارہا ہے، یہ ایک ضروری احتیاطی تدبیر ہے؛ لیکن اس کی وجہ سے ہزاروں وہ مزدور جن کا گذر بسر یومیہ مزدوری پر ہے روزگار سے محروم ہوگئے ہیں اعہ فاقہ اور حد درجہ کسمپرسی سے گذرنے پر مجبورہورہے ہیں، اس پس منظر میں مسلمان اہل ثروت کا فریضہ ہے کہ وہ اپنے غریب بھائیوں کی مدد

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close