بہار و سیمانچل

حضرت مولانا صغیر احمد صاحب کے انتقال سے ملت کا ناقابل تلافی نقصان ، مفتی رضوان قاسمی

بیرول دربھنگہ 27 / جنوری (پریس ریلیز ) استاذالعلماء نامور عالم دین حضرت مولانا صغیر احمد صاحب رحمانی کے انتقال کی خبر سے بے صدمہ کا اظہار کرتے ہوئے مرکزی جمیعت علماء سیمانچل کے صدر جید عالم دین حضرت مولانا مفتی محمد رضوان عالم قاسمی استاذ مدرسہ رحمانیہ افضلہ سوپول دربھنگہ نے جاری اپنے تعزیتی پیغام میں کہا کہ حضرت مولانا صغیر احمد صاحب رحمانی رحمہ اللہ ملک کے جلیل القدر علمائے ربانی میں تھے وہ حضرت امیر شریعت رابع کے تربیت یافتہ ہونے کے ساتھ ساتھ عرصہ دراز تک ان کے زیر سایہ تدریسی و تحریکی خدمات انجام دیا اور جامعہ رحمانی ، خانقاہ رحمانی کے ساتھ ہی مدرسہ رحمانیہ سوپول ، امارت شرعیہ اور مسلم پرسنل لاء بورڈ سے ان کی گہری وابستگی رہی جامعہ رحمانی سے علیحدگی کے بعد جمیعت علماء ہند کے پلیٹ فارم سے ملی خدمات کیلئے آخری سانس تک سرگرم رہے اور اس وقت جمیعت علماء ضلع سوپول کے صدر بھی تھے دعا ہے کہ الله تعالیٰ حضرت مولانا کی بال بال مغفرت فرمائے اور اپنے جوار رحمت میں جگہ دے آمین ثم آمین تقریباً 25 / برسوں سے حضرت مولانا صغیر احمد صاحب رحمانی رحمہ اللہ رحمتہ واسعہ سے ملاقات بات رہی ہر ملاقات میں شفقت کا اظہار فرماتے بہت کم لوگوں کو معلوم ہوگا کہ ان کا آبائی وطن ڈومریا ہے اور میرے نانہال کے لوگوں سے خاندانی رشتہ بھی جس کا اظہار اکثر ملاقات میں کرتے بڑے افسوس کی بات ہے کہ ابھی چند روز قبل اسی گاؤں کے مشہور عالم دین اور بڑوں کے صحبت یافتہ قاضی شریعت حضرت مولانا مفتی حسین احمد صاحب بھی الله کے پیارے ہوگئے تھے جانے والی یہ دونوں شخصیتیں ایسی تھی جس کی تلافی دیر اور دور دور تک ممکن نہیں ،اہل خانہ و پسماندگان بالخصوص مولانا صغیر احمد صاحب رحمانی رحمہ اللہ کے چھوٹے بھائی استاذ مکرم حضرت مولانا مفتی شعیب احمد صاحب سابق استاذ مدرسہ رحمانیہ سوپول ضلع دربھنگہ سے تعزیت مسنونہ کا اظہار کرتا ہوں اور غم میں برابر کا شریک ہوں ،آسماں تیری لحد پے شبنم افشانی کرے

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close