بہار و سیمانچل

دربھنگہ : جالے تھانہ علاقہ کے ریونڈھا گاؤں میں کشیدگی دفعہ 144 نافذ کردی گئی

دربھنگہ (محمد سلطان اختر ہندوستان اردو ٹائمز) ضلع دربھنگہ کے تحت جالے تھانہ علاقہ کے ريوندھا گاؤں میں دوپہر 2 بجے کے بعد فرقہ وارانہ تناؤ پیدا ہوگیا ، موصولہ اطلاع کے مطابق مہاویر جھنڈا ہر سال جنوری میں منایا جاتا ہے۔ جس کے لیے بانس کاٹنے کے لئے جاتے ہیں ہر سال جاتے تھے کسی کو معلوم بھی نہیں ہوتا تھا لیکن اس بار ڈی جے اور باجا گاجا کے ساتھ اور دل بل کے ساتھ اور جئے شری رام کے نعرے کے ساتھ بانس کاٹنے کے لئے مہاویر جھنڈا والے جارہے تھے مسجد کے قریب نمازیوں نے کہا پہلی بار یہ گاجے باجے کیوں ڈی جے باجا کے ساتھ ایسا کیوں کررہے ہو ، کم از کم مسجد کے قریب تو بند کردو ، تو جلوس کے سربراہ چن چن پرساد سابق ایم ایل اے کا بھائی نے کہا "کون روکے گا مجھے؟” میں لے جاؤں گا۔ کس میاں کے گانڈ میں طاقت ہے کہ ہم سب کو روک دے،مسجد کے پاس بوڑھے لوگ تھے خاموشی اختیار کر لیا اور کچھ نہیں کہا ، اس جلوس کو مسلمان آبادی سے ہوکر تکیا محلہ کی مسجد کے راستے بانس کاٹنے چیمنی چوک لے گیا،اسی درمیان میں گانے بجاتے ہوئے ، ڈی جے اور جئے شری رام کے نعرے کے ساتھ جاتا دیکھ کر گاؤں کے لوگوں نے روکا تو پھر اس بار بھی گالی گلوج کرنے لگا، سابق ایم ایل اے کا بھائی چن چن پرساد اور ان کے ساتھی مل کر لڑائی جھگڑے پر آمادہ ہو گئے اس پر ہجوم منتشر ہو گیا، تھانے کے پولیس اہلکار تماشا دیکھ رہے تھے ، پولیس کو مسجد کے قریب ہی کارروائی کرنی تھی، لیکن ان سب چیزوں کو نظر انداز کر دیا،اس میں ایسا لگتا ہے کہ پولیس کی ملی بھگت سے اس کام کوں انجام دیا گیا ہے، اس ہجوم نے پوپری سے واپس آنے والے محمد ارشاد کے ہاتھ پر حملہ کر دیا جس نے اس کا ہاتھ بری طرح سے کٹ گیا۔ اور ہجوم جیسے ہی حاجی معین الدین مرحوم کے گھر کے قریب آیا میت میں آنے والے لوگوں کو گالیوں سے دوچار کیا اور کرسی کو توڑ کر اسے تباہ کردیا ۔ مسجد، قبرستان تک کو نہیں چھوڑا قبرستان کی دیوار کو پھاند کر کھر کا بوجھا اور اكری کے بوجھے کو نذر آتش کر دیاجو قبرستان کی ملکیت تھی، چن چن پرساد سابق ایم ایل اے کا بھائی، دنیش پرساد کے بڑے بیٹے اور چن چن حلوائی کا نام آگ لگانے والوں میں شامل ہے۔ جالے تھانے کے پولیس اہلکار موجود تماشائی بنے تھے،خبر ملتے ہی ضلع انتظامیہ اور پولیس کپتان دربھنگہ سے موقع پر پہنچ کر حالات کا جائزہ لیا اور دفعہ 144 نافذ کر دیا گیا.

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close