بہار و سیمانچل

مظفرپور: یوپی میں مظاہرین کےساتھ ہوئے تشدد اور آتنک کےخلاف سی پی آئی ایم ایل نے احتجاجی مارچ نکالا

سی اے اے ، این آر سی اور این آر پی کے خلاف مظاہرہ کرنے والوں کے ساتھ وحشیانہ برتاؤ کرنے والے یوگی استعفی دیں: مینا تیواری

مظفرپور:30دسمبر (پریس ریلیز ) دستور کے خلاف کسی بھی کالے قانون کو کوئی بھی ہندوستانی آخری دم تک منظور نہیں کرے گا۔ پولیس اور حکمرانوں کا ظلم و تشدد عوامی جذبات کو کچل نہیں سکتا ہے۔ ہندوستانی عوام ہر حال میں دستوری آزادی کو بحال کریں گے۔ دستور کے دفعات کے خلاف بنایا گیا کالا قانون’’ سی اے اے‘‘(سیٹیزن شپ امینڈ منٹ بل)، ’’این آرسی‘‘ (نیشنل رجسٹریشن آف سیٹیزن )اور ’’این پی آر‘‘ (نیشنل پاپولیشن رجسٹریشن) جو سنگھ پریوار کے ایجنڈے کے تحت بنایا گیا ہے وہ کسی بھی صورت میں ہم سواسو کروڑ ہندستانیوںکو منظور نہیں ہے۔ اس دستور مخالف کالے قانون کے خلاف جمہوری طریقے پر احتجاج کر رہے عام شہریوں پر پولیس کا وحشیانہ تشدد ناقابل برداشت اور قابل مذمت ہے، ریاست یوپی کے وزیر اعلی یوگی آدیتہ ناتھ فوری طور پر استعفی دیں، ان خیالات کا اظہار سی پی آئی ایم ایل (بھاکپا مالے) کے بینر تلے ملک گیر سطح پر نکالے گئے احتجاجی مارچ کی قیادت کررہیں اکھل بھارتیہ پرگتی شیل مہیلا ایسوسی ایشن (ایپوا)کی قومی جنرل سکریٹری میناتیواری نے کیا۔انھوں نے کہا کہ: ’’ اب تک پولیس کے ظلم و تشدد سے احتجاج کر رہے ۲۵؍ سے زائد مظاہرین کی موت ہو چکی ہے۔جن میں سے اکثر اترپردیش میں ہوئی ہے۔ مودی اور یوگی حکومت ان اموات کی ذمہ دار ہے‘‘۔انھوں نے کہا کہ:’’عام شہریوں کو دستوری حقوق سے محروم کردینے کی سازش کبھی کامیاب نہیں ہو سکے گی۔ ملک میں امن و امان کی بحالی کے لیے انصاف اور دستوری آزادی کی بحالی لازمی ہے‘‘ وہیں سی پی ایم ایل مظفرپور کے ضلعی سیکریٹری کرشن موہن نے کہا کہ یوپی حکومت نے اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کی آواز کو دبانے کے لئے ہر طرح کی ظالمانہ کارروائی کی۔ اور غیر قانونی طور پر نہتے مظاہرین پر گولیاں چلائیں، لاٹھی چارج کیا اور اندھا دھند گرفتار کرکے عوام کے دلوں میں خوف وہراس پیدا کرنے کی بھرپور کوشش کی اور پھر مسلمانوں کی املاک کو ضبط کرکے نازی دور کی یاد دلا دی۔ کرشن موہن نے کہا کہ سی اے اے،این آرسی، اور این آر پی ملک کے دستور کےخلاف ہے اسے کسی بھی حالت میں نافذ نہیں ہونےدیاجائےگا اس موقع پر پروفیسر اروند کمار ڈے، سترودھن سہنی، ساردھا دیوی،منوج یادو، رام شکل رام،راہل سنگھ ،امتیاز احمد جے این یو،شفیق الرحمن ،محفوظ الرحمن، سیفی، کے علاوہ سیکڑوں کی تعداد میں لوگ موجود تھے

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close