بہار و سیمانچل

شہریت ترمیمی بل کے خلاف 23؍دسمبر کو دربھنگہ میں احتجاج!

دربھنگہ ۔ 11؍دسمبر 2019 (رفیع ساگر) مرکزی حکومت کے ذریعہ لگاتار مسلمانوں پر یکطرفہ حملہ جاری ہے۔ کبھی تین طلاق پر قانون، تو کبھی رام مندر کے حق میں فیصلہ تو کبھی NRC کے نام پر مسلمانوں کو پریشان کیا جارہا ہے۔ ابھی ایک دن پہلے لوک سبھا میں امیت شاہ کے ذریعہ شہریت ترمیمی بل کو منظوری دی گئی ہے جو نہ صرف آئین کی خلاف ورزی ہے بلکہ سیدھے سیدھے مسلمانوں کے خلاف ہے یہ بل۔ اس طرح کابل کسی بھی حالت میں نہ تو ملک کے حق میں ہے اور نہ ہی مسلمانوں کے حق میں۔ اس لئے اب وقت آگیا ہے کہ مسلمانوں کو سبھی معاملے کو بھول کر ایک پلیٹ فارم پرآکر اپنی آوازبلند کرنی ہوگی اور اس بل کے خلاف ملک گیر سطح پر زبردست احتجاج درج کرانا ہوگا تاکہ یہ آواز UNO تک پہنچے اور اس بل کو موجودہ حکومت فوری طور پر واپس لے۔ اس بل کی سخت مخالفت کرتے ہوئے آل انڈیا مسلم بیداری کارواں نے بھی مورخہ 23 دسمبر کو دربھنگہ کمشنری تک احتجاجی مظاہرہ کرنے کافیصلہ کیا ہے۔ اس احتجاجی مارچ کو کامیاب بنانے کے لئے 14دسمبر کو دربھنگہ شہر میں مشعل جلوس نکال کر عوام کو بیدار کیا جائے گا اور حکومت کو بھی انتباہ کیا جائے گا کہ اس طرح کا کوئی بھی بل جومسلمانوں کے خلاف مرکزی حکومت بنارہی ہے اسے مسلمان یا آئین ہندپر یقین رکھنے والے کو منظور نہیں ہوگا۔ مذکورہ اطلاع آل انڈیا مسلم بیداری کارواں کے صدرنظرعالم نے پریس بیان جاری کردی ہے۔ مسٹرنظرعالم نے تمام دانشوران، طلباء، فلاحی و ملی تنظیموں کے سربراہان، تمام مسلک کے علماء کرام، سماجی کارکنان، تمام سیاسی سیکولر پارٹیوں کے لیڈران و کارکنان، ائمہ مساجد، مدارس کے ذمہ داران، علماء کرام، مدرسہ یونین کے ذمہ داران، مدارس اساتذہ،مسلمانوں کے نام پر سیاسی کرسی سے چپکے لیڈران، ملت کے نوجوان اور تمام امن و انصاف پسند عوام سے اپیل کیا ہے کہ وہ اس پروگرام میں بلاتفریق شرکت فرمائیں تاکہ حکومت وقت کو یہ بتادیا جائے کہ ہم اس طرح کے مسلم مخالف، آئین مخالف کسی بھی بل کو قبول نہیں کرسکتے۔ اس لئے اس طرح کے بل کو حکومت فوراً واپس لے اور امیت شاہ۔مودی اپنی ہٹلرگیری چھوڑے۔ پروگرام کی تیاری کو لیکر ایک اہم میٹنگ محلہ لال باغ، پانی ٹنکی (دفتر اقرأ گرافکس، دربھنگہ) کے کیمپس میں مورخہ 12 دسمبر کودن کے 2:30 بجے بلائی گئی ہے آپ تمام حضرات اس نیوز کو ہی دعوت نامہ سمجھ کر ضرور تشریف لائیں تاکہ پروگرام کو کامیاب بنایا جاسکے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close