بہار و سیمانچل

نوادہ میں ندیوں کا ٹینڈر لیا نئے اصول کے تحت  37 افراد نے ریت کی کان کنی کے لئے ٹینڈر کیا 

نواده ( محمد سلطان اختر ہندوستان اردو ٹائمز )  ضلع نوادہ میں ریت کی کان کنی  ٹینڈر کے لئے بہت ہی افرا تفری اور تباہی مچ گئی ہے۔  حکومت کے نئے قواعد کے تحت ، ضلع میں ریت کان کنی کے لئے ٹینڈر لینے کا عمل مکمل ہوچکا ہے۔  اس بار حکومت نے  ضلع میں  آبادکاری کا نظام ختم کردیا ہے۔  اس نئے اصول کے تحت لوگوں کو دریا کے مطابق ٹینڈر دیا جائےگا۔  ضلع میں کل 7 ندیاں ہیں۔  جس کے لیے  37 افراد نے ٹینڈرنگ کے آخری دن تک ٹینڈر بل جمع کروائے ہیں۔  اس کے لئے محکمہ مائننگ نے ٹینڈر ہولڈر سے ایڈوانس رقم کے طور پر 10 فیصد وصول کیا ہے۔  جس میں ٹینڈر 12 دسمبر کو کھولا جائے گا۔
 اس نئے اصول میں ہر ندی کو 5 سال تک ٹینڈر کیا جائے گا۔  ٹینڈر کے تحت بولی ای نیلامی کے تحت آن لائن کی جائے گی۔  اس حوالے سے محکمہ کی جانب سے سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔  کتنے لوگوں نے ٹینڈر جمع کروائے ہیں اس کے بارے میں ایک بلیو پرنٹ تیار کرنے کا عمل شروع کیا گیا ہے۔
 ضلع بھر میں کل سات دریاؤں سے ریت اٹھتی ہے۔  اس نئے اصول سے قبل ، ٹینڈرنگ گھاٹوں کے مطابق کی جاتی تھی۔  لیکن حکومت نے ایسا نظام ختم کردیا ہے تاکہ ایک فرد ایک یا دو ندیاں ٹینڈر لے سکیں۔  یہ بتادیں کہ ضلع میں ڈھاڈر ندی ،تلیّا ندی ، پنچانے ندی ،  کھوری ندی ،  دھنارجیے ندی ،  سکری ندی اور ناٹی ندی ان سب ندیاں  کا انتظام ضلع میں کیا جارہا ہے۔  آخری دن تک ان سات ندیاں کے لئے 37 ٹینڈر کئے گئے ہیں۔  سکری ندی میں سات دریاؤں میں سب سے زیادہ محفوظ ذخیرہ 12 کروڑ 38 لاکھ کا ہے۔  اسی طرح  ندیوں میں سب سے کم مقدار میں پانچانے ندی  ، کھوڑی ندی  اور ناٹی ندی  شامل ہیں۔  جس کی لاگت 76 لاکھ 24 ہزار ہے۔  نئے ٹینڈر کے بعد ہی ماحولیاتی سرٹیفکیٹ  ملے گا
 ضلع میں ایک اصول موجود ہے کہ ماحولیاتی ثبوت کے بغیر ریت کو نئے گھاٹیوں سے نہیں اٹھا سکتے ہیں، ریت کے نئے اینڈوومنٹ کو نہ اٹھایا جائے۔  اس کے لئے  دہلی سے ماحولیاتی سند حاصل کرنا ہوتا ہے۔  ضلع میں ریت گھاٹ کے پرانے ٹینڈر سینسر جئے ماتا دی کے ڈائریکٹر گوپال پرساد کا کہنا ہے کہ ماحولیاتی سند کے بغیر ریت اٹھانے پر پابندی ہے۔  ٹینڈر کے بعد ماحولیاتی سند دستیاب ہونے میں 6 ماہ تک کا وقت درکار ہے۔  ایسے حالات میں شہریوں کو ریت کے لئے پریشانی بڑھ جاتی ہے۔  تاہم  انہوں نے کہا کہ اس کے لئے  حکومت نے حکومتی محصول میں اضافہ کرکے پرانے سینسر کے محصول کو متبادل انتظام کے تحت بڑھانے پر اتفاق کیا ہے۔  اس صورتحال میں لوگوں کو تھوڑا انتظار کرنا پڑے گا جب تک کہ نئے سینسروں کو ماحولیاتی سند حاصل نہ ہو جائے۔
 حکومت کی ہدایت پر ٹینڈرنگ کا عمل مکمل کرلیا گیا ہے۔  ان ٹینڈروں کو اپ ڈیٹ کیا جارہا ہے۔  اس کے بعد ، 12 دسمبر کو ریت کے تصفیہ کے لئے بولی لگائی جائے گی۔  اس بار یہ تصفیہ ندیاں کے مطابق کیا جارہا ہے۔  جس میں 37 افراد نے کل 7 ندیوں کے لئے ٹینڈر جمع کروائے ہیں۔  ان اضلاع میں جہاں ندی ٹوٹ چکی ہے  وہاں ندیاں کا معاملہ ENGT دہلی میں درج کیا گیا ہے۔  لیکن نوادہ میں کوئی ندی  نہیں توڑا گیا ہے۔  یہاں کے تمام ندیاں کا الگ الگ ٹینڈر کیا جارہا ہے۔
 کس ندی کا نام ہےمحفوظ رقم اور ٹینڈر میں جمع شدہ ایڈوانس رقم ندی کا نام- محفوظ ڈپازٹ کی رقم- ڈھاڈر ندی کے 10٪ کی جمع – 1،90،60540- 19،06060 تليہ ندی- 1،33،42380  – 13،34240 پنچانائے ندی- 76،24،220- 7،62430 کھوڑی ندی- 76،24،220- 7،62430 دھانراجئے ندی، 1،14،36،320- 11،43،640 سکری ندی- 12،38،93،460- 1،23،89350   ناٹی نہیں 76،24،220-

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close