بہار و سیمانچل

اسلام کا اولین مقصد خدمت خلق ہے, اور یہی مقصد ہمیں نئ نسلوں میں پیدا کرنا ہے. مولانا نبیل اختر نوازی

گوموہ 30 نومبر (محمد سُلطان اختر ایچ یو ٹی )

اسلام دنیا کا واحد مذہب ہے جو احترام انسانیت و آدمیت کا درس روز آفرینش سے ہی دے رہا ہے. انسانی معاشرہ میں کوئ بھوکا اور پریشان نہ رہے اس کے لیے اللہ نے صدقہ واجبہ اور نافلہ کا ایسا عمل مسلمانوں کو عطا فرمایا جس کے ذریعہ سے مسلمان ہر زمانے میں دیگر اقوام و ملل سے فائق اور ممتاز رہے ہیں, اس نیک عمل سے خیر خواہی اور تعاون کا ماحول معاشرہ میں پیدا ہوتا ہے, جس کے ذریعہ سے انسانی معاشرہ میں توازن برقرار رہتا ہے. ان خیالات کا اظہار مرکز الدراسات القرآنیہ, جامعہ دار ارقم کے وسیع صحن میں منعقدہ تقسیم کمبل تقریب سے مرکز ہذا کے سربراہ اعلی مولانا نبیل اختر نوازی فرما رہے تھے. انھوں نے اس موقع پر فرمایا جامعہ دار ارقم کی نسبت حضرت ارقم ابن ابوالارقم رضی اللہ تعالی عنہ کے اسی گھر سے جو اسلام اور مسلمانوں کا اولین درسگاہ ہے, جسے اسلام کی پہلی یونیورسیٹی ہونے کا اعزاز حاصل ہے, جس کے طلبہ کو قرآن کے مطابق ” السابقون الاولون "ہونے کا شرف حاصل ہے , اسی نسبت سے اس ادارہ کا نام جامعہ دار ارقم رکھا گیا ہے, ادارہ کے ذمہ داروں کو فقط نسبت پر بھروسہ ہے اور نسبت سے ہی چیزیں ممتاز ہوا کرتی ہیں,
انھوں نے تقریب میں شریک معززین شہر کو خطاب کرتے ہوئے فرمایا کہ اسلام نے علم کو کبھی تقسیم نہیں کیا ہے, قرن اول سے لیکر ساڑھے بارہ سو سال تک ہماری درسگاہوں میں قرآن و حدیث کے ساتھ ہی زمانے کے تقاضے کے مطابق علوم طلبہ کو فراہم کیا جاتا رہا ہے, یہی وجہ تھی کہ ہمارے یہاں اس وقت ایک عالم, عالم قرآن بھی ہوتا تھا اور مہندس (انجینئر) بھی ہوتا تھا محدث بھی ہوتا تھا موجد (inventor )بھی ہوتا تھا, حافظ قرآن بھی ہوتا تھا اور طبیب حاذق بھی ہوتا تھا , انھوں نے فرمایا کہ جامعہ دارارقم کے نصاب میں حفظ پلس میٹرک کو ترجیح دینے کا مقصد بھی یہی ہے کہ ہمیں دین اور دنیا کے تقاضے کو پورا کرنے والا علوم نئ نسلوں کو فراہم کرنا ہے تاکہ نئ نسلوں کی شخصیت اور ذات ہمہ جہت ہوسکے, اس موقع پر جامعہ کے پرنسپل الحاج قاری عبد الواحد رضا نے جامعہ کے طلباء کو عمدہ اور نفیس کمبل فراھم کرانے والے انجینئر نور عالم صاحب, ڈاکٹر طلعت صاحبہ, کلیم اشرفی اور ڈاکٹر عطاءالرحمان صاحب کاجامعہ کے انتظامیہ کی طرف سے شکریہ ادا کیا اور تقریب کا اختتام صلاۃ و سلام اور مولانا مشتاق عالم صاحب کی دعاء پر ہوا

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close