بنگلور

کرناٹک میں بی ایس یدیورپا کو ہٹانے کی مہم شروع، وزیراعلیٰ کی حمایت کرنے والے ایم ایل اے بھی فعال

بنگلورو7جون (ہندوستان اردو ٹائمز) کرناٹک میں قیادت میں تبدیلی کے لیے جاری احتجاج ایک بار پھر تیزہوگیا ہے۔ وزیراعلیٰ بی ایس یدی یورپا کو ہٹانے کے لیے اس طرح کی مہم گذشتہ ایک سال سے جاری ہے لیکن یدی یورپا پہلی بار اپنا دفاع کرتے نظر آرہے ہیں۔ دستخطی مہم ان کے حق میں چل رہی ہے۔ یدی یورپا کے پولیٹیکل سکریٹری رینوکاچاریہ نے یدی یورپپا کے ساتھ رہنے والے ایم ایل اے کے دستخط جمع کیے ہیں۔

معلومات کے مطابق بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے 118 میں سے 65 ارکان اسمبلی نے اس پر دستخط کیے ہیں۔ رینوکاچاریہ کا کہنا ہے کہ میں اپنے دل پر ہاتھ سے کہہ رہا ہوں کہ 65 ارکان اسمبلی نے اس پر دستخط کیے ہیں۔ اگر کوئی کہتا ہے کہ یہ سب وزیراعلیٰ کے بیٹے وجندر کے کہنے پر ہوا ہے ، تو وہ کہہ سکتے ہیں ، لیکن ایم ایل اے کی مرضی سے یہی ہو رہا ہے۔ یدی یورپا کی ہدایات پر ایسا نہیں ہورہا ہے۔ ہم یہ اس لیے کررہے ہیں کہ میں ایک ایم ایل اے بھی ہوں۔وزیراعلیٰ کے خلاف مظاہروں کی ان اٹھتی آوازوں کے درمیان ، سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کون کون ہے جو لنگایتت کے مضبوط رہنما یدی یورپا کے خلاف آواز اٹھا رہا ہے اور اس کی کیا وجہ ہے؟ اس کے پیچھے سب سے بڑی وجہ یدی یورپا خاندان کی طرف سے تمام وزارتوں کے ماتحت منتقلی اور پوسٹنگ میں مداخلت بتائی جاتی ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close