بنگلور

پہلی بار سی ایم بی ایس ایڈی یدورپا کی حج قرعہ اندازی تقریب میں شرکت حج بھون کیلئے 5 کروڑ کا اعلان

بنگلورو،11/جنوری (ہندوستان اردو ٹائمز) کرناٹک حج کمیٹی کے توسط سے سفر حج 2020- پر ریاست کے مختلف اضلاع سے روانہ ہونے والے 6734عازمین حج کا انتخاب آج آن لائن قرعہ اندازی کے ذریعہ کیا گیا- قرعہ اندازی کے لئے کرناٹک حج بھون میں منعقدہ تقریب میں ریاستی وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا نے بٹن دبا کر آن لائن قرعہ اندازی کا اجراء کیا- ایڈی یورپا نے پہلی بار کسی حج سے متعلق تقریب میں شرکت کی ہے- اس سے قبل بھی وہ ریاست کے وزیر اعلیٰ رہ چکے ہیں – لیکن کسی بھی حج تقریب میں شرکت نہیں کی تھی- شاید سی اے اے، این آر سی اور این پی آر کی مخالفت میں بشمول بنگلور ریاست بھر میں ہورہے احتجاجی مظاہروں نے ایڈی یورپا کو اس تقریب میں شرکت کرنے پر مجبور کیا ہے- عام طور پر وہ مسلمانوں کی ایسی تقاریب میں شرکت کرنے سے گریز کرتے ہیں – اس مرتبہ سنٹرل حج کمیٹی نے کرناٹک میں مسلمانوں کی آبادی کے تناسب کے حساب سے 6734حاجیوں کا کوٹہ الاٹ کیا ہے-جبکہ حج درخواستیں صرف 9823 موصول ہوئی ہیں – اس سے قبل الاٹ کردہ کوٹہ سے تین گنا درخواستیں موصول ہوئی تھیں – حج 2017 میں 23486، 2018 میں 18407 اور 2019 میں 13983 درخواستیں موصول ہوئی تھیں – کم حج درخواستیں موصول ہونے سے صاف ظاہر ہے کہ اکثر مسلمان مالی بحران میں مبتلا ہیں جن کی اہم وجوہات پہلے نوٹ بندی جس کی وجہ سے صنعتیں اور کاروبار متاثر ہوئے- کئی لوگوں کو اپنا روزگار کھونا پڑا- معاشی سست روی اور آئی ایم اے گھوٹالہ کرناٹک کے ہزاروں مسلمانوں نے پونزی کمپنی آئی ایم اے میں کروڑوں روپئے سرمایہ لگایا تھا اس کمپنی کی دھوکہ دہی سے اکثر مسلمان متاثر ہوئے ہیں اور انہیں مالی بحران کا سامنا ہے- اس لئے اکثر مسلمانوں نے اس مرتبہ سفر حج پر جانے کی ہمت نہیں کی ہے- تقریب کا آغاز قرأت و نعت سے ہوا- ریاستی حج کمیٹی کے صدر نشین آر روشن بیگ نے اپنی استقبالیہ تقریرمیں تمام کا استقبال کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ شری بی ایس ایڈی یورپا پورے ہندوستان کے لئے نمونہ ہیں – اس حج بھون کی تعمیر کے لئے ایڈی یورپا نے 40/کروڑ روپئے جاری کئے تھے- ابھی یہاں 10/کروڑ روپئے کا کام باقی ہے- اس کے لئے فنڈ جاری کرنے کی درخواست کی اور کہا کہ گلبرگہ میں ایرپورٹ کی تعمیر مکمل ہوچکی ہے- مرکزی وزارت شہری ہوابازی پر دباؤ ڈال کر گلبرگہ سے حج پروازیں راست جدہ یا مدینہ منورہ روانہ کروانے کی وزیر اعلیٰ سے گزارش کی تاکہ یہاں کے 5اضلاع کے عازمین کی روانگی اور واپسی گلبرگہ ایرپورٹ سے ہو-
حج بھون کے لئے 5/کروڑ روپئے: وزیر اعلیٰ نے اس تقریب میں شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے مقدس سفر حج پر جانے والوں کو مبارکباد دیتے ہوئے کہاکہ حج بھون کا التوا میں پڑا کام مکمل کرنے کے لئے وہ فوری 5/کروڑ روپئے جاری کریں گے اور گلبرگہ سے حج پروازیں راست جدہ روانہ کرنے کے لئے وہ مرکزی حکومت سے سفارش کریں گے تاکہ یہاں کے اطراف و اکناف اضلاع کے عازمین حج گلبرگہ ایر پورٹ سے روانہ ہوں -اس موقع پر انہوں نے عازمین سے درخواست کی کہ وہ مکہ اور مدینہ منورہ میں اپنی دعاؤں میں ملک کی ترقی خوشحالی اور قومی یکجہتی کے لئے دعا ضرور کریں –
سی اے اے کا دفاع: ہمیشہ کی طرح اس تقریب میں بھی متنازعہ قانون سی اے اے اور این آر سی کا دفاع کرتے ہوئے ایڈی یورپا نے کہا کہ ملک یا ریاست میں سی اے اے کے نفاذ سے مسلمانوں کو کوئی پریشانی نہیں ہوگی- یہ قانون شرناتیوں کو شہریت دینے کے لئے لایا گیا ہے- انہوں نے دعویٰ کیا کہ وہ ایک ایسے سیاستدان ہیں جنہوں نے کبھی ہندو مسلم، سکھ عیسائی کے درمیان ذات پات کا بھید بھاؤ نہیں کیا وہ یہ ضمانت بھی لیتے ہیں کہ سی اے اے سے ریاست میں مسلمانوں کو کوئی تکلیف نہیں ہوگی- انہوں نے یہ بھی وعدہ کیا کہ مسلم طبقہ کاکوئی بھی کام ہو وہ 24/گھنٹوں میں حل کریں گے- اس حج بھون کی تعمیر کے لئے انہوں نے ہی 40/کروڑ روپئے جاری کئے تھے-
پربھو چوہان: ریاستی وزیر برائے امور اقلیت حج و اوقاف پربھو چوہان نے کہا کہ میں اقلیتوں کے خادم کی طرح اقلیتوں کو صد فی صد انصاف دلاؤں گا- ایڈی یورپا حکومت اقلیتوں کے ساتھ ہے- پچھلی ریاستی مخلوط حکومت نے اقلیتوں کے بجٹ میں کٹوتی کردی تھی لیکن اگلے بجٹ میں ایڈی یورپا حکومت اقلیتوں کے لئے مناسب بجٹ مختص کرے گی- کمی نہیں کرے گی- سی اے اے کا پربھو چوہان نے بھی دفاع کیا اور کہا کہ یہ ہرگز ہندوستانی مسلمانوں کے خلاف نہیں ہے-
عبد العظیم ریاستی اقلیتی کمیشن کے چیرمین:عبدالعظیم نے اپنے خطاب میں کہاکہ انہیں پہلی بار حج بھون دیکھنے کا موقع ملا ہے۔ اس مرتبہ سفر حج پر جانے والے عازمین سے انہوں نے کہا کہ اللہ آپ کو پہلے ہی منتخب کرچکا ہے۔ یہ اب رسمی کارروائی مکمل ہورہی ہے۔اپنی دعاؤں میں ہندوستان کی ترقی، امن و امان، قومی یکجہتی اور بھائی چارہ کے لئے بھی دعا کریں۔ انہوں نے کہا کہ 2006 سے قبل اقلیتوں کے لئے صرف قلیل رقم26کروڑ روپئے بجٹ میں مختص کی جاتی تھی۔2006 میں ایڈی یورپا ہی نے اقلیتوں کے فنڈ میں زبردست اضافہ کیا تھا۔ آئندہ سال برائے 2020-21 کے بجٹ میں اقلیتوں کے لئے ایڈی یورپا نے معقول بجٹ مختص کرنے کایقین دلایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس موقع پر سابق وزیر پروفیسر ممتاز علی کو بھولنا نہیں چاہئے جنہوں نے نہ صرف اس حج بھون کے لئے زمین حاصل کی بلکہ تعمیر کے لئے حکومت سے منظوری بھی حاصل کی۔انہوں نے کہا کہ کرناٹک میں مسلمانوں کی ایک کروڑ سے زیادہ آبادی ہے۔ اس لئے ایڈی یورپا کابینہ میں ایک مسلم نمائندہ کا ہونا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ اللہ کی مرضی کے بغیر ایک پتہ بھی نہیں ہل سکتا تو مسلمانوں کو سی اے اے اور این آر سی سے گھبرانے کی ضرورت نہیں۔ ہمارے باپ دادا، پڑدادا جو مسلمان تھے اور ہندوستانی شہری ہیں، ہندوستان سے ہمیں کوئی بھگا ہی نہیں سکتا۔ ریاستی حج کمیٹی کے ایگزی کیٹیو افسر سرفراز خان نے تمام کا شکریہ ادا کیا۔ اس تقریب میں اقلیتی بہبود، حج اور اوقاف کے سکریٹری ابراہیم اڈور آئی اے ایس اور ریاستی حج کمیٹی کے اراکین نے شرکت کی۔ ریاستی حج کمیٹی کے نوڈل آفیسر سید اعجاز احمد نے نظامت کے فرائض انجام دئے۔6734حج کوٹہ میں سے ریزرو زمرہ اے کے تحت 459عازمین اور بغیر محرم کے زمرہ سے 32خواتین کا راست قرعہ کے بغیر انتخاب کیا گیا ہے-چند اضلاع کے لئے مسلم آبادی کے تناسب سے الاٹ کوٹہ سے بھی کم درخواستیں موصول ہوئی تھیں۔ان کا بقیہ کوٹہ دیگر اضلاع کے اوسط کی بنیاد پر الاٹ کردیا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق دیگر ریاتوں میں بھی کوٹہ سے کم درخواستیں موصول ہوئی ہیں۔ اس لئے کرناٹک کو آئندہ ایک ہزارسے زیادہ اضافی کوٹہ ملنے کا امکان ہے-

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close