بنگلور

بنگلور: دارالعلوم حنیفہ کاڑ گوڑی میں حضرت مولانا مرحوم سید محمد ولی رحمانی رحمۃ اللہ علیہ کی یاد میں تعزیتی نششت کا انعقاد

وائٹ فیلڈ بنگلور (مفتی محمد مقبول قاسمی ، ہندوستان اردو ٹائمز) ایک عظیم شخصیت اب ہمارے درمیان نہیں رہے… پچھلے ایک سال سے اکابر علماء کرام کا یوں دارفانی سےکوچ کرنا جانا یہ عظیم سانحہ اور ایساخلاء ہے جو شاید رہتی دنیا تک پوری نہ ہو.. اکابر علماء کرام کا وصال ایک بہت بڑا تشویشناک مرحلہ ہے.. لیکن یہ بھی اٹل فیصلہ ہے کہ رب کے مرضی کے آگے کچھ بھی نہیں. چونکہ وہ اعلانیہ طور پر فرما چکا. کل من علیہا فان. ویبقی وجہ ربک ذو الجلال والاکرام.. کہ تمام کی تمام چیزیں ایک دن فنا ہو کر رہ جائیں گی اور باقی صرف اورصرف وحدہٗ لاشریک لہ. کی ذات ہوگی.
یقینا دنیا ایک نہ ایک دن فنا ہو جائے گی. دنیا کے سارے لوگ…سارے جاندار دار فنا ہو جائیں گے. اور رب ذوالجلال کی ذات اقدس باقی رہ جائے گی.

لیکن جانے والوں میں کچھ جانے والے ایسے ہوتے ہیں جو اپنوں کے ساتھ ساتھ پورا گاؤں. محلہ. علاقہ. پورا شہر. صوبہ. بل کہ پوری دنیا کو مغموم کر جاتے ہیں.. انہی ہستیوں میں سے ایک ہستی حضرت مولانا مرحوم سید محمد ولی رحمانی رحمۃ اللہ علیہ کی ہے. جنہوں نے تین اپریل2021 کو دوپہر کے ڈھائی بجے اس دنیا کو الوداع کہا اور آخری سانس لی.. یقیناً حضرت کے جانے سے جوخلاء پیدا ہو گیا ہے اس کا پر ہونا ناممکن نہیں تو زمانہ قریب میں مشکل ضرور دکھتا ہے . تعزیت پیش کرنے کے لیے وائٹ فیلڈ کے علمائے کرام نے ایک ایصال ثواب و تعزیتی نششت کا دارالعلوم حنیفہ کاڑ گاڑی میں انعقاد کیا. تمام علمائے کرام نے اپنے اپنے طور پر حضرت علیہ رحمۃ اللہ کے خدمات کو سراہا اور حضرت کے بلندی درجات کے لیے. بلند مقامات کے لیے. انکی تمام خدمات کی قبولیت کے لیے. دعائیں کیں . حضرت کے تمام متعلقین سے اور خصوصاً فرزندان و تمام رشتہ داروں سے تعزیت مسنونہ پیش کرتے ہوئے کہا یقیناً جس طرح سے آپ مغموم ہیں اور جتنا غم آپ کو ہے اس سے کہیں زیادہ ہم غمگین ہیں کہ آج ہمارے درمیان حضرت مولانا سید محمد ولی رحمانی نہیں رہے.. اللہ تبارک و تعالی حضرت کی مغفرت کاملہ فرمائے. بلندئ درجات کے فیصلے فرمائے.. اعلیٰ علیین میں جگہ عطا فرمائے. نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا جوار نصیب فرمائے. عرش کے سائے میں جگہ عطا فرمائے..
تعزیت میں شریک من جملہ علماء کرام میں
مفتی عمران قاسمی. امام و خطیب جامع مسجد وائٹ فیلڈ
مفتی محمد نعمان صاحب قاسمی امام مسجد عمر جی کے نگر.
مفتی محمد مقبول قاسمی امام و خطیب مسجد حدیبیہ بسوانہ نگر ہوڑی
مفتی محمد انعام الحسن صاحب قاسمی امام و خطیب جامعہ مسجد ورتور
مفتی محمد شفیق احیائی صاحب قاسمی امام و خطیب مسجد رحمانیہ وجے نگر
مولانا محمد اظہر مظاہری امام مصلی. ہوڑی،
مولانا محمد مقبول احمد صاحب قاسمی امام و خطیب جامعہ مسجد الکریم کورلور
مولانا فوزان فہد قاسمی امام خطیب مدینہ مسجد کاڑ گوڑی: محمد اشرف حسن صاحب رحمانی، مدرسہ دارالعلوم حنفیہ وائٹ فیلڈ

مولانا ظفر امام صاحب، مہتمم مدرسہ دارالعلوم حنفیہ کاڑ گوڑ ی.. نے تعزیت پیش کرتے ہوئے کہا کہ حضرت مرحوم علیہ الرحمہ. اب اس دنیا میں نہیں رہے وہ جنت کے مسافر بن کر چلے گئے یقین نہیں آتا اب ہم ان سے کبھی نہیں مل نہیں سکیں گے وہ کیا چلے گئے پورے شہر کو ماتم کناں کر کے چلے گئے اب ہزاروں آنکھیں اشکبار ہیں دلوں کی دھڑکنیں تیز تر ہوتی جارہی ہیں ساری برادری سوگوار ہے.. ہزاروں علماء و حفاظ آپ سے زانوئے تلمذ تہ کرچکے ہیں، حضرت مرحوم علیہ الرحمہ ہردلعزیز تھے ہر ایک کےدلوں میں رچ بس گئے تھے. فصیح البیان تھے زبان شیریں تھی خطابت کا جوہر ایسا تھا کہ بات دلوں میں اتر جاتی تھی…
اللہ تعالٰی حضرت مولانا کے حسنات کو قبول فرمائے، سيئات سے درگزر فرمائے اور ہمیں ان کا نعم البدل عطا فرمائے، آمین یا رب العالمین…

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close