بنگلور

بنگلور: حلقہ کے آر پورم میں علماء کرام نے حضرت مولانا ولی رحمانی رحمۃ اللہ علیہ کے انتقال پر تعزیتی و دعائیہ مجلس کا کیا انعقاد

ایک ایسی شخصیت کا داغ مفارقت دے جانا بلاشبہ ایک عظیم سانحہ ہے

بنگلور (مفتی محمد مقبول قاسمی ، ہندوستان اردو ٹائمز) حضرت مولانا سید محمد ولی رحمانی رحمۃ اللہ علیہ کا سانحہ امت کے لئے اور خصوصاً علماء و طلبہ کے لئے ایک بہت ہی بڑا اور المناک حادثہ ہے جیسا کہ حدیث پاک میں ہے ایک عالم کی موت.. پورے عالم کی موت کے مانند ہے اس حدیث کے پورے مصداق سید محمد ولی رحمانی رحمۃ اللہ علیہ ہیں. جو آج جو ہمارے درمیان نہیں رہے انہوں نے دنیا کو الوداع کہہ دیا ہے اور اب دنیا ایک ایسی عظیم ہستی سے محروم ہوگئی. بروز ہفتہ 3۔اپریل دوپہر ڈھائی بجے. حضرت کا وصال ہوا. اور بروز اتوار 4۔ اپریل تقریبا 11 بجے حضرت کی جنازہ کی نماز خانقاہ مونگیر میں ادا کی گئی … اس المناک وغمناک موقع پر علمائے. کے آر پورم نے جامعہ حسینہ ایپانگر میں بروز اتوار بعد نماز ظہر.. ایک ایصال ثواب و تعزیت مجلس کا انعقاد کیا تعزیتی مجلس میں شریک ہونے علماء کرام میں خصوصاً
حضرت مولانا منور صاحب مظاہری. حضرت مولانا مظفر حسین صاحب مظاہری حضرت مولانا خورشید ربانی صاحب مولانا عبد الجبار صاحب مفتی محمد مقبول قاسمی.. اور ان سب میں ہم سب کے مشفق و محب حضرت مولانا محمد مقصود رشیدی صاحب اور کے آر پورم کے من جملہ علماء شریک تھے.

مولانا منور حسین صاحب مظاہری نے تعزیت پیش کرتے ہوئے کہا کہ *حضرت مولانا سید محمد ولی رحمانی رحمتہ اللہ علیہ ایک عظیم دانشور، جری اور بے باک لیڈر تھے، دینی اور دنیاوی دونوں طرح کی ان کو قیادت اور سیادت حاصل تھی، مولانا نے مزید کہاکہ مدارس کے فضلاء میں ہندوستان کے قانون اوراس کی باریکیوں سے واقفیت میں ان کی کوئی نظیر نہیں تھی، مولانا بلا خوف وخطر حق بات ہمیشہ کہتے تھے، اور سر عام کہتے تھے، ظالموں کے منہ پر کہتے تھے، جس کو حدیث پاک میں کہاگیا ہے کہ’’ حق بات ظالم بادشاہوں کے سامنے کہنا ایمان کی علامت ہے‘‘، مولانا ایسے وقت میں ہمیں داغ مفارقت دے گئے جبکہ ان کی سر پرستی کی شدید ضرورت تھی، اور اب امت مسلمہ کی کشتی منجدھارمیں ہچکولے لے رہی ہے،،

مولانا خورشید ربانی نے اشعاری طور حضرت مرحوم علیہ الرحمہ کے لیے دعائیں کیں… اللہ تعالی حضرت کی بال بال مغفرت فرمائے،، ان کے اہل خانہ، معتقدین، نیز امت مسلمہ کو صبر کی توفیق نصب فرمائے اوران کا نعم البدل عطا فرمائے، ۔….
اللہ تبارک و تعالی اپنی بارگاہ صمدیت میں حضرت کے تمام خدمات کو قبول فرما کر اپنی شایان شان بدلہ عطا فرمائے. جنت الفردوس میں جگہ عطا فرمائے. اعلیٰ علیین میں اعلی سے اعلی مقام عطا فرمائے.. اللہ رب العزت حضرت کے حق میں ہمارا ایصال ثواب کرنا تعزیت مسنونہ پیش کرنا قبول فرمائے آمین….

مفتی محمد مقبول قاسمی.. امام و خطیب مسجد حدیبیہ. بسوانہ نگر ہوڑی.. بنگلور. 48

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close