بنگلور

حقیقی سکون و اطمینان ایمانی زندگی سے وابستہ ہے: شاہ ملت مولانا سید انظر شاہ قاسمی

دونوں جہاں کا سکون اور کامیابی اللہ اور رسول اللہﷺ کی اطاعت میں ہی ہے!

حقیقی سکون و اطمینان ایمانی زندگی سے وابستہ ہے: شاہ ملت مولانا سید انظر شاہ قاسمی
دونوں جہاں کا سکون اور کامیابی اللہ اور رسول اللہﷺ کی اطاعت میں ہی ہے!

بنگلور، 26؍ نومبر (محمد فرقان): عصر حاضر کے ترقی یافتہ دور میں جہاں انسان جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے زمین کی گہرائیوں سے سے آسمان کی بلندیوں تک پہنچ چکا ہے۔ہر طرح کی سہولت اور مشکل سے مشکل کام بآسانی کئے جارہے ہیں اور زندگی کو راحت پہنچا کی ہر ممکن کوشش کرچکا ہے۔لیکن آرام و راحت کے یہ اسباب جس قدر بڑھتے جارہے ہیں قلب کے اضطراب اور روح کی بے چینی میں بھی اسی قدر اضافہ ہوتا جارہا ہے اور فریب تمدن کے دام صدرنگ میں گرفتار انسانیت تڑپ رہی ہے، چیخ رہی ہے اور تلاشِ سکون میں در در کی ٹھوکریں کھارہی ہے۔ مگر یہ متاع گم شدہ کہیں سے ہاتھ لگ نہیں رہی ہے۔ اس مادی عروج وترقی، ظاہری چمک دمک اور سامانِ راحت کی اس کثرت سے انسان کو چین و سکون اور امن واطمینان حاصل نہیں ہورہا ہے اور قلب کو تسکین اور روح کو آسودگی نہیں مل رہی ہے! آخر کیا وجہ ہے؟ مذکورہ خیالات کا اظہار مسجد ام کلثومؓ، ارکرے، بنگلور میں ہزاروں مسلمانوں کو خطاب کرتے ہوئے ممتاز عالم دین، شیر کرناٹک، شاہ ملت حضرت مولانا سید انظر شاہ قاسمی مدظلہ نے کیا۔
شاہ ملت نے فرمایا کہ علم و فن، تحقیق و جستجو اور عروج و ترقی کے اس دور میں آخر انسانیت کیوں تباہ ہورہی ہے؟ مولانا نے فرمایا کہ جو مسلمان اپنے مقصد زندگی کو فراموش کرتے ہوئے اور آخرت کی زندگی سے غافل ہوتے ہوئے اور چند روزہ فانی دنیا کی لذت کو ترجیح دیتے ہوئے بد عملی کی زندگی گزارتا ہے۔ایسے بے مقصد اور بد عمل مسلمان کو دنیوی زندگی کی بیشمار و بیش بہا نعمتوں کے حصول کے بعد بھی سکون و اطمینان کا ایک لمحہ بھی نصیب نہیں ہوتا ہے۔کیونکہ حقیقی سکون و اطمینان تو ایمانی زندگی میں پنہاں ہے۔مولانا قاسمی نے فرمایا کہ اطمینان بخش اور سعادت مند زندگی اللہ اور رسول اللہﷺ کی اطاعت میں ہے جبکہ پریشانی، قلق اور خوف و انتشار اللہ تعالیٰ کی نافرمانی اور خلاف سنت طرز زندگی میں ہے۔ مولانا نے فرمایا کہ انسانی نفس کی حفاظت اور معاشرے کی سلامتی اللہ تعالیٰ پر ایمان اور راہ ہدایت پر عمل اختیار کرنے میں ہے۔ انسان کو خوشی اور سعادت مندی اسی راہ سے ملے گی جیسے اہل اللہ اور صالحین کو ملتی ہے۔
مولانا شاہ قاسمی نے فرمایا کہ موجودہ دور میں لاکھوں انسان سکون اور چین سے محروم ہیں۔ لاکھوں انسان ایسے ہیں جنہیں نیند کی گولیاں لینا پڑتی ہیں۔ ہزاروں لوگ ایسے ہیں جو نفسیاتی سکون کیلئے طبی مراکز کے چکر کاٹتے ہیں۔ لوگوں کو کسی طور پر بھی سکون اور چین نہیں۔ وہ ہر وقت خوف و ہراس میں مبتلا ہیں۔ قلق اور پریشانی انکی زندگی کا حصہ ہے۔ اسکی بنیادی وجہ یہ ہے کہ انہوں نے دنیا کی چند روزہ زندگی کو مقصد حیات بنالیا ہے۔ وہ بھول گئے کہ حقیقی اطمینان اور سکون اللہ تعالیٰ کا عطا کردہ ہے۔ شاہ ملت نے فرمایا کہ مسلمانوں کو چاہئے کہ دنیا کی سب سے بڑی نعمت حاصل کریں، جو ایمان باللہ کے بغیر ممکن نہیں۔ انہوں نے کہا کہ مومن وہ ہے جو راسخ العقیدہ ہے، عبادت میں حسن پیدا کرتا ہے۔ اللہ پر توکل کرتا ہے، دنیا اسکا مطمع نظر نہیں، وہ جانتا ہے کہ رزق کی کنجیاں اللہ کے ہاتھ میں ہیں اور جو اللہ چاہتا ہے وہی ہوگا۔ لہٰذا مسلمانوں کو چاہیے کہ وہ اللہ کی نافرمانی اور نفس کی مرغوبات سے اجتناب کریں۔ توبہ و استغفار کرتے ہوئے حقیقی سکون، اطمینان بخش اور سعادت مند زندگی بسر کریں۔مولانا سید انظر شاہ قاسمی نے فرمایا کہ اللہ کی اطاعت و فرمابردای اور اتباع سنت ہی میں دونوں جہاں کی کامیابی میسر ہوگی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close