بنگلور

وائٹ فلیڈ  بنگلور : دارالعلوم حنیفہ میں  تقریری ونعتیہ تقابلی پروگرام کا انعقاد

دارالعلوم حنیفہ میں  تقریری ونعتیہ تقابلی پروگرام کا انعقاد
 الحمدللہ 26 ربیع الاول کو مدرسہ دارالعلوم حنیفہ کاڑ گوڑی وائٹ فلیڈ  بنگلور  میں ایک  تقریری و نعتیہ تقابلی پروگرام کا انعقاد کیا گیا 
جس میں  مدرسے کے بچوں نے اپنے اپنے پروگرام پیش کیے ..  اس پروگرام میں
بحیثیت صدر جمیعت العلماء کرنا ٹک کے صدر   حضرت مولانا عبدالرحیم صاحب رشیدی دامت برکاتہم  مدعو تھے..
حکم کےطور پر مفتی محمد مقبول قاسمی
اور مفتی محمد انعام الحسن صاحب قاسمی مدعو تھے.
ان کے علاوہ قرب و جوار کے تمام ہی علمائے کرام کو مدعو کیا گیا تھا…
الحمدللہ پروگرام کا آغاز  اپنے وقت پر تلاوت قران کریم سے کیا گیا.. نعت رسول صلی اللہ علیہ و سلم کے بعد..
  بچوں نے یکے بعد دیگرے پروگرام پیش کرنا شروع کیا  تقریبا  20 بچوں کا پروگرام تھا مختلف عنوان تھے… مختلف نظمیں اور نعتیں تھیں.  ہر طالب علم آتا اور اپنی اپنی استعداد کے مطابق اپنا پروگرام پیش کرتا..
 یقین جانیے  بچوں کا پروگرام سننے اور دیکھنے کے بعد وہاں پر جتنےعلماء کرام تشریف فرما تھے.. اور جو دور دراز سے مہمان تشریف لائے ہو ئے تھے  ان سبھوں نے اپنی اپنی انگلیاں دانتوں تلے دبا لیے… یہ چھوٹے چھوٹے بچے جنہوں نے پروگرام پیش کیا   اسے دیکھ کر حیران رہ گئے..
الحمداللہ بچوں نے بہت ہی خوب اور بہت ہی اچھے انداز میں  پروگرام پیش کیا. ہر بچہ ایک دوسرے سے اعلی اور فائق ونمایاں نمبر سے آگے بڑھنے کی کوشش کر رہا تھا…
 لیکن تقدیر کے فیصلے سے ماورا کوئی نہیں تھا ہر کسی کو اس پلصراط سے گزرنا تھا بہرحال ہوا وہی جو تقدیر میں لکھا جا چکا تھا اور ان تمام بچوں میں چند ایک بچوں نے  اپنی ایڑی چوٹی کا زور لگا کر دوسروں بچوں سے فائق اور اعلی نمبر سے کامیاب ہوتے دکھائی دیئے..
 میں تو یہ ہرگز نہیں سمجھتا کہ جو بچے پوزیشن نہیں لا سکےوہ ناکام ہیں  ایسا ہرگز نہیں ..
بلکہ تمام ہی بچے اعلی درجے پر کامیاب ہیں  اور  اپنی محنت میں ان کو بہترین بدلہ ملا ہوا ہے  بس یہ ہے کہ اللہ تبارک وتعالی  کبھی کسی کو فوقیت عطا کرتا ہے..
تو کبھی کسی کو فوقیت عطا کرتا ہے…
 مدرسہ ہٰذا میں پروگرام پیش کرنے والے بچوں کو چار حصوں میں تقسیم کیا گیا تھا..
گروپ( الف) تقریر ..
اول.. دوم.. سوم .لانے والے طلبہ  
اول پوزیشن   محمد اعظم.. 
دوم پوزیشن   محمد شادمان.. سوم پوزیشن  محمد ابوذر نے حاصل کی.. 
 گروپ (الف) نعت   
اول پوزیشن   محمد اعظم 
دوم پوزیشن   محمد اظہر
 سوم پوزیشن  محمد ممتاز 
نےحاصل کی ہے..
 اسی طرح سے گروپ (ب)
 تقریر  میں 
اول پوزیشن   محمد انس
دوم پوزیشن   محمد نعمت اللہ سوم پوزیشن سمیع اللہ نے حاصل کی ہے
 گروپ (ب)    نعت میں 
اول پوزیشن    انس
دوم پوزیشن   محمد  
سوم پوزیشن   محمد احتشام 
نے حاصل کی ہے
 مدرسے کے ان تمام بچوں نے  دوسرے بچوں سے اعلی اور نمایاں نمبر حاصل کی ہے..
 آپ حضرات دعا فرمائیے اللہ رب العزت ان کو اور دوسرے تمام بچوں کو خوب ترقی عطا فرمائے.. بہترین حافظ و قاری  اور جید عالم باعمل بنائے….
جب علم کی تلاش اور جستجو میں  کوئی بھی طالب علم  اپنے آپ  کو علم کے راستے  میں مگن اور دلجمعی کے ساتھ  لگا لیتا ہے تو یقین جانیے ہر کٹھن سے کٹھن موڑ.. کٹھن سے کٹھن راستے  اور منزلیں  اس کے لیے آسان سے آسان تر ہوجاتی ہیں. اور وہ اکیلا ہی میدانوں کو
جنگلات کو   بیابان کو.  دریاؤں  کو.   اور صحراؤں کو.   فتح کرتے ہوئے اپنے منزل مقصود کو پہنچ جاتا ہے..
 اور پھر ایک وقت ایسا آتا ہے کہ اللہ رب العزت اس طالبعلم سے وہ کام لے لیتا ہے کہ رہتی دنیا تک لوگ اسے یاد کرتے رہتے ہیں وہ لوگوں میں موجود نہیں رہتا لیکن اس کی یادیں لوگوں کے دلوں میں صدیوں باقی رہ جاتی ہیں  .. 
 آخر میں حضرت صدر محترم نے ناصحانہ کلیمات ارشاد فرمائے..  
اور فرمایا کہ الحمدللہ بچوں نے کافی حد تک بہت ہی اچھے انداز میں پروگرام پیش کیا  بچے الحمدللہ اپنے مشن میں اور مقصد میں سو فیصد کامیاب نظر آرہے ہیں   عوام سے خطاب کرتے ہوئے فرمایا کہ ہم آپ کو ان طالبان علوم نبویہ کی خدمت کے لیے  ہمیشہ کوشاں رہنا چاہیے  مدرسے کی جو بھی ضروریات ہو.  ہمیں بڑھ چڑھ کر حصہ لینا چاہئے تاکہ یہ بچے یکسوئ کے ساتھ اپنی  علمی پیاس کو بجھانے میں لگے رہیں.. 
آخر میں  مدرسہ کے ذمہ داران اور خیر خواہان کے لئے  دعائیہ کلمات کے ساتھ … دعائے مستجاب کے ذریعے جلسے کا اختتام ہوا… 
مفتی محمد مقبول  قاسمی.  امام وخطیب مسجد خدیبیہ ہوڑی  بنگلور

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close