بنگال

سوشل میڈیا پر پارٹی مخالفین سے دوستی اور’ لائک‘ کرنا پڑے گا مہنگا :بنگال بی جے پی کا نیا فرمان

نئی دہلی، 28 جون (ہندوستان اردو ٹائمز) مغربی بنگال میں بی جے پی کے اندر جاری ہنگامہ آرائی کے درمیان پارٹی کارکنان میں نظم و ضبط کولے کر اب سخت ہوگئی ہے۔ بی جے پی نے ہدایت جاری کی ہے کہ اگر کوئی بھی عہدیدار یا پارٹی کارکن سوشل میڈیا پر کسی ایسے شخص کے ساتھ دوستی کرتا ہے جو مخالف پارٹی کا ہے یا پارٹی مخالف پوسٹ کو لائک کرتا ہے تو اس کے خلاف کاروائی کی جائے گی۔ پارٹی نے رواں ماہ کی 8 تاریخ کو ایک تادیبی کمیٹی تشکیل دی تھی۔ بی جے پی کے لوک سبھا ممبر پارلیمنٹ سبھاش سرکار اس تین رکنی کمیٹی کی سربراہی کر رہے ہیں، اسی کمیٹی نے یہ ہدایات جاری کی ہیں اور کہا ہے کہ اس سلسلے میں مکمل سختی کی جائے گی۔ کمیٹی کے سربراہ سبھاش سرکار نے تصدیق کی کہ کمیٹی نے یہ حکم جاری کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ جو نظریہ کے طور پر ہمارے ساتھ نہیں ہیں، ایسے لوگ ہمارے مخالفین کو مشتعل کرتے ہیں اور وہ پارٹی کے خلاف سوشل میڈیا میں لکھتے ہیں، اگر پارٹی کا کوئی کارکن ایسے لوگوں کے ساتھ جان بوجھ کر یا نادانستہ طور پر ہے تو پارٹی کے لئے اچھا نہیں ہے۔ ایسے لوگ جو پارٹی کے خلاف لکھتے ہیں، اگر ان کے ساتھ ہماری پارٹی کے عہدیدار یا کارکن شامل ہوں گے تو انہیں لکھنے میں مزہ آئے گا۔اس لئے ہم نے ہدایت دی ہے کہ پارٹی کے ذمہ داران اور کارکنان سوشل میڈیا پر ایسے لوگوں سے دور رہیں جو ہماری پارٹی کے نظریہ کے خلاف لکھتے ہیں، ان لوگوں سے بھی دور رہیں جو ہماری پارٹی کے آئینی عہدوں اور عوامی نمائندوں کے خلاف لکھتے ہیں۔ ان ہدایات پر سختی سے عمل کرنے کو کہا گیا ہے اور واضح طور پر کہا گیا ہے کہ ایسا نہ کرنے پر تادیبی کارروائی کی جائے گی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close