بنگال

ناردااسٹنگ کیس: سپریم کورٹ کے جج نے ممتا بنرجی کی درخواست پر سماعت سے خود کو الگ کیا

نئی دہلی،22؍ جون (ہندوستان اردو ٹائمز) نارد ااسٹنگ کیس میں بنگال کی چیف منسٹر ممتا بنرجی کی درخواست پر سپریم کورٹ کے جج نے سماعت سے خود کو الگ لیاہے۔ جسٹس انیرودھ بوس کے برطرف ہونے سے اب دوسری بینچ سماعت کرے گی۔ ممتا نے کلکتہ ہائی کورٹ کے نارداسٹنگ کیس میں حلف نامہ داخل کرنے کی اجازت نہ دینے کے حکم کو چیلنج کیا ہے۔ جسٹس انیرودھ بوس اور ہیمنت گپتا کی بنچ نے ممتا اور مغربی بنگال کے وزیر قانون ملے گھٹک کی طرف سے دائر الگ الگ اپیلوں کی سماعت کی ہے۔ اس سے قبل سپریم کورٹ نے کہا تھا کہ وہ 22 جون کو ملے گھٹک کے ذریعہ دائر اپیل کی سماعت کرے گی۔ عدالت نے 18 جون کو کولکاتہ ہائی کورٹ سے عدالت عظمیٰ کے حکم کے خلاف ریاستی حکومت اور گھٹک کی درخواست پر غور کرنے کے ایک دن بعد اس معاملے کی سماعت کرنے کی درخواست کی تھی۔

کلکتہ ہائی کورٹ کے اس معاملے میں حلف نامہ داخل کرنے کی اجازت سے انکار کے بعد ممتا بنرجی نے سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا۔ اس معاملے میں ممتا بنرجی کو فریق بنایا گیا تھا۔ سی بی آئی نے گذشتہ ماہ ترنمول کانگریس کے چار وزرا کو گرفتار کیا تھا اور وہ سی بی آئی آفس پہنچے تھے۔گزشتہ ماہ ٹی ایم سی کے چار وزراء فرہاد حکیم ، سبرت مکھرجی ، ایم ایل اے مدن مترا اور سابق میئر سوون چٹرجی کو نارد گھوٹالہ میں سی بی آئی نے گرفتار کیا تھا۔ یہ معاملہ اسٹنگ آپریشن سے متعلق ہے ، جسے عام طور پر ناردااسٹنگ آپریشن کے نام سے جانا جاتا ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close