بنگال

ممتابنرجی نے مودی کوخط لکھا ،مرکز کی ویکسی نیشن پالیسی کو ’کھوکھلاشو‘ قرار دیا

کولکاتہ20اپریل(ہندوستان اردو ٹائمز) وزیراعلیٰ ممتا بنرجی نے منگل کو وزیر اعظم نریندر مودی کو مرکزی حکومت کی ٹیکہ لگانے کی نئی پالیسی پر تنقید کرتے ہوئے ایک خط لکھا اور ذمہ داریوں سے بچنے کے لیے اسے ’کھوکھلا ، غیر حقیقی اور افسوسناک شو‘ قرار دیا۔ مرکزی حکومت نے پیر کو یکم مئی سے 18 سال سے زیادہ عمر کے تمام لوگوں کو اینٹی کوویڈ 19 ویکسین متعارف کروانے کا اعلان کیا۔ یہ فیصلہ وزیر اعظم نریندر مودی کے زیرصدارت ایک میٹنگ میں کیا گیا۔اس کے تحت ویکسین کی ماہانہ پیداوار کا 50 فیصد مرکزی حکومت کوفراہم کریں گے اور وہ ریاستوں اور کھلی منڈی میں باقی 50 فیصد ویکسین فراہم کرسکیں گے۔ممتا بنرجی نے خط میں لکھاہے کہ مجھے یہ اطلاع ملی ہے کہ مرکزی حکومت نے 19 اپریل کو یونیورسل حفاظتی ٹیکوں کی پالیسی کو منظوری دے دی ہے جو بحران کے اس وقت میں ذمہ داریوں سے بچنے کے لیے مرکزی حکومت کا کھوکھلا ، غیر حقیقی اور افسوسناک دکھاواہے۔

وزیراعلیٰ نے وزیر اعظم کو یہ بھی یاد دلایا کہ انہوں نے 24 فروری کو خط لکھا تھا تاکہ وہ اپنے وسائل سے ویکسین خریدنے کی اجازت دیں تاکہ ریاست کے لوگوں کو مفت حفاظتی ٹیکے لگائے جاسکیں۔انھوں نے کہاہے کہ آپ کی طرف سے کوئی جواب نہیں ملا۔ اب جب دوسری لہر میں معاملات اتنی تیزی سے بڑھ رہے ہیں ، مرکزی حکومت لوگوں کو ویکسین فراہم کرنے کی اپنی ذمہ داری سے پیچھے ہٹ رہی ہے۔انہوں نے بتایاہے کہ پیر کو اس سلسلے میں کیے گئے فیصلے میں ویکسین کے معیار ، اس کی افادیت ، خوراکوں کے مینوفیکچررز کو درکار سپلائی اور ان کی قیمتوں کے حوالے سے کوئی وضاحت نہیں ہے۔انہوں نے اس خدشے کا اظہار کیا کہ مرکز کی یہ پالیسی بازاروں میں ویکسین کی قیمتوں کا تعین کرے گی جس سے عام لوگوں پر معاشی بوجھ بڑھ جائے گا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close