بنگال

کیاانتخابی مہم کی بڑی قیمت چکائیں گی انتخابی ریاستیں؟بنگال میں کورونا کیسز میں 378 فیصد اضافہ،دیگر انتخابی ریاستیں بھی پیچھے نہیں

نئی دہلی12اپریل(ہندوستان اردو ٹائمز) جب ملک کی پانچوں ریاستوں میں سے نصف سے زیادہ انتخابی عمل ختم ہوچکا ہے ، گذشتہ 15 دنوں میں کوروناکے معاملات تقریباََ دوگنا ہوگئے ہیں۔ مغربی بنگال اور آسام جیسی ریاستوں میں الیکشن کمیشن نے ووٹنگ کی تاریخ کا اعلان کرنے سے پہلے ہی انتخابی تیاری شروع کردی تھی۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے تاریخوں کے اعلان کے بعد یہ مہم زور شور سے شروع ہوئی تھی اور اس دوران ، کورونا پروٹوکول بھی اڑتا ہوا دیکھا گیا تھا۔ یہی وجہ ہے کہ پچھلے 14 دنوں میں معاملات میں فی صد بہت زیادہ اضافہ دیکھا گیاہے۔

وزیراعظم سمیت وزراء کی تابڑتوڑریلیاں ہورہی ہیں۔جہاں سماجی فاصلے کی دھجیاں اڑائی جارہی ہیں۔اب دیکھنایہ ہے کہ ان بڑھتے معاملات کے لیے کس کوذمے دارقراردیاجاسکتاہے۔ سب سے زیادہ متاثرریاست مغربی بنگال (انتخابی ریاستوں میں) ہے جہاں 378 فیصد اضافہ واقع ہوا ہے۔ یہاں ، کورونا کیسز کی تعداد30230تک جا پہنچی ہے۔ ریاست میں آٹھ مرحلوں میں انتخابات ہونے ہیں ، آخری اور آخری مرحلہ 27 اپریل کو ختم ہوگا۔ الیکشن کمیشن پولنگ مراکز میں احتیاط کادعویٰ کر رہا ہے۔ جسمانی درجہ حرارت لیا جارہا ہے ، ہینڈ سینیٹائزر بھی مہیا کیا گیا ہے اور ووٹروں میں معاشرتی دوری کی جارہی ہے۔ لیکن اس کوشش کے دوران نہ ہی فریقین اور نہ ہی قائدین اور ان کے حامی ، کورونا کے رہنماخطوط پر عمل کرتے ہوئے دیکھے گئے ہیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close