قومی

بغیرشادی کے پیدا ہونے والا بچہ بھی جائیداد کا حقدار ہے : سپریم کورٹ

نئی دہلی ، 14جون (ہندوستان اردو ٹائمز ) سپریم کورٹ نے اہم فیصلہ سناتے ہوئے بغیر شادی کے پیدا ہونے والے بچوں کو بھی باپ کی جائیداد میں حقدار قرار دیا ہے۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ اگر کوئی عورت اور مرد طویل عرصے تک ساتھ رہتے ہیں تو اسے شادی سمجھا جائے گا اور اس رشتے سے پیدا ہونے والے بچوں کو بھی باپ کی جائیداد میں حق ملے گا۔

سپریم کورٹ نے کیرالہ ہائی کورٹ کے اس فیصلے کو منسوخ کر دیا جس میں عدالت نے ایک نوجوان کو اس کے والد کی جائیداد میں حصہ دار نہیں سمجھا کیونکہ اس کے والدین کی شادی نہیں ہوئی تھی۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ دونوں نے شادی نہیں کی ہو گی لیکن دونوں ایک طویل عرصے سے میاں بیوی کی طرح ساتھ رہے ہیں۔ ایسے میں اگر ڈی این اے ٹیسٹ میں یہ ثابت ہو جائے کہ بچہ ان دونوں کا ہے تو بچے کا باپ کی جائیداد پر پورا حق ہے۔خیال رہے کہ کیرالہ کے ایک شخص نے اپنے والد کی جائیداد کی تقسیم میں حصہ نہ ملنے پر ہائی کورٹ میں مقدمہ دائر کیا تھا۔ اس نے کہا تھا کہ اسے ناجائز بیٹا کہہ کر حصہ نہیں دیا جا رہا ہے۔

کیرالہ ہائی کورٹ نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا تھا کہ جس شخص سے وہ جائیداد کا دعویٰ کر رہا ہے، اس کی ماں نے اس سے شادی نہیں کی، اس صورت میں اسے خاندانی جائیداد کا حقدار نہیں سمجھا جا سکتا۔2010 میں سپریم کورٹ نے لیو ان ریلیشن شپ کو تسلیم کیا۔ اس کے ساتھ گھریلو تشدد ایکٹ 2005 کے سیکشن 2 (ایف) میں بھی لیو ان ریلیشن کا اضافہ کیا گیا۔ یعنی لیو ان میں رہنے والا جوڑا گھریلو تشدد کی رپورٹ بھی درج کرا سکتا ہے۔ لیو ان ریلیشن کے لیے جوڑے کو میاں بیوی کی طرح ایک ساتھ رہنا پڑتا ہے لیکن اس کے لیے کوئی وقت کی حد نہیں ہے۔ایسا ہی معاملہ کانگریس کے رہنما نارائن دت تیواری کے ساتھ بھی ہوا، جو اتر پردیش اور اتراکھنڈ کے وزیر اعلیٰ تھے۔

کانگریس لیڈر اجولا شرما نے دعویٰ کیا تھا کہ ان کا اور نارائن دت تیواری کا رشتہ تھا جس سے ایک بیٹا روہت شیکھر پیدا ہوا تھا۔ اس نے تیواری کی جائیداد میں روہت کا حق مانگا تھا۔ نارائن دت تیواری نے عدالت میں رشتہ سے انکار کیا تھا۔طویل مقدمے کی سماعت کے بعد سپریم کورٹ نے ڈی این اے ٹیسٹ کا حکم دیا۔ اس ٹیسٹ سے ثابت ہوا کہ روہت شیکھر نارائن دت تیواری کا بیٹا ہے۔ عدالت کے حکم کے بعد روہت اور اجولا کو نارائن دت تیواری نے گود لیا تھا۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button