حیدرآباد

بانی شہر محمدقلی قطب شاہ کی تہذیب کے تسلسل میں شاندار محفل شعروادب کاانعقاد،صلاح الدین نیئر کوشہنشاہ شعروادب کاخطاب

دانشوران اردوادب آصف پاشاہ، ای اسماعیل،پروفیسر شکور، ڈاکٹرمحمدغوث ،افضل الدین ودیگر کاخطاب

حیدرآباد۔(راست ) ذیمریس ادبی فورم وآل انڈیا اردوماس سوسائٹی فارپیس کے زیراہتمام تزئین فکروخیال وتہذیب شعروحکمت کے خدوخال پرروشنی ڈالنے کیلئے شہر کے منتخب دانشوران شعروادب کو مدعوکیاگیاتھا۔ مدعوئین میں اردواکیڈیمی آندھراپردیش کے پہلے صدراورسابق وزیر قانون حکومت آندھراپردیش جناب آصف پاشاہ کے علاوہ مہمانان خصوصی ومقررین کی حیثیت سے جناب ای اسماعیل (سابق جج)،پروفیسر ایس اے شکور(صدر شعبہ اردو جامعہ عثمانیہ)، پروفیسر نسیم الدین فریس (صدر شعبہ اردومولانا آزادنیشنل اردویونیورسٹی)،پروفیسر سیدفضل اللہ مکرم(صدرشعبہ اردوحیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی)، ڈاکٹرمحمدغوث(ڈائرکٹرتلنگانہ ریاستی اردواکیڈیمی)، جناب صلاح الدین نیئر (مدیرخوشبوکاسفر)،جناب عابدصدیقی(سابق نیوزایڈیٹردور درشن)، ڈاکٹرم ق سلیم(صدر شعبہ اردو شاداں کالج)،ایم اے ماجد(فور ٹی وی)، ڈاکٹرسیدفضل حسین پرویز (مدیرہفتہ گواہ ) اور ایس کے افضل الدین مدعوتھے۔ ادبی اجلاس کے بعد شہر کے نمائندہ منتخب شعراء کایادگارمشاعرہ ہوا ۔ مدیر خوشبوکا سفرجناب صلاح الدین نیئر نے صدارت کی۔ مہمانان خصوصی کی حیثیت سے شہر کے نامور شعراء جلال عارف، مسرور عابدی، ڈاکٹرفاروق شکیل اور سردارسلیم نے شرکت کی۔

جناب لطیف الدین لطیف نے نظامت کے فرائض انجام دیئے۔ دیگر شعراء میں سمیع اللہ سمیع، شفیع اقبال،کامل حیدرآبادی،لطیف الدین لطیف،آتش حیدرآبادی اورجہانگیر قیاس شامل تھے جنہوں نے اپنے بہترین کلام سے محفل شعر وادب کے وقارمیں اضافہ کیا۔ جناب لطیف الدین لطیف نے نہایت عمدگی سے مشاعرہ کی کاروائی چلائی۔ داعیان محفل شعروادب ڈاکٹرمختاراحمدفردین اورڈاکٹرمظفرعلی ساجد نے خیرمقدم کیا۔ڈاکٹرمختاراحمدفردین نے نہایت عمدگی کے ساتھ شاندار طریقہ سے آراستہ کی گئی محفل کومخاطب کرتے ہوئے کہاکہ آئندہ بھی اس طرح کی محفلوں کا انعقادعمل میں لایاجائے گا۔ ڈاکٹرمظفرعلی ساجد نے کہاکہ وہ میزبان محفل کی حیثیت سے بھرپور تعاون کرتے رہیں گے۔ یہ مثالی محفل شعروادب 14ستمبر کوپانچ بجے شام منعقدہوئی۔ صدرمحفل آصف پاشاہ نے اردواکیڈیمی کے قیام کے خدوخال پرتفصیلی روشنی ڈالی اور کہاکہ اس طرح کے محفلوں کے انعقاد سے شہر کی اعلیٰ وارفع محفلو ںکی یادتازہ ہوجاتی ہے۔ بہترین روایات کی پاسداری اردومعاشرہ کے ہرشخص کو کرنا چاہئے۔ پروفیسر ایس اے شکور نے حیدرآبا د کی اردوتہذیب کی افادیت پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا پچھلا دور بہت شاندار رہا لیکن آج بھی شہر کی مختلف انجمنوں کی جانب سے ادبی وشعری محفلوں کاانعقاد عمل میں لایاجاتا ہے جوقابل تعریف ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان انجمنوں کے سربراہوں کو پچھلی روایات کے تسلسل کو برقراررکھنا چاہئے۔

 

ڈاکٹر مختاراحمدفردین ایک متحرک شخصیت کے مالک ہیں اور مختلف نوعیت کے پروگرام منعقدکرنے میں شہرت رکھتے ہیں۔ ڈاکٹرمحمدغوث ڈائرکٹر اردواکیڈیمی نے کہا کہ اردواکیڈیمی کی سرگرمیاں جس انداز سے بھی جاری ہیں ان سرگرمیوں کے مفاد میں دانشوران شعروادب کا تعاون ان کے مشورے بے حدضروری ہیں۔ انہوں نے کہا معیاری جلسوں کیلئے اردواکیڈیمی کی سرپرستی برقرار رہے گی۔ صلاح الدین نیئر نے کہا کہ شہر کے قدیم اردو اداروں اورانجمنو ںکومتحرک ہونا چاہئے تاکہ پچھلی اعلیٰ روایات کی پاسداری باقی رہے۔ نئے انداز سے زبان اردو کے تحفظ کیلئے دلچسپی لینی چاہئے۔ جناب عابد صدیقی نے کہاکہ ہمارے شہر کے علمی وادبی اداروں کے ذمہ دارو ں کو چاہئے کہ صاف ستھرے انداز میں اپنی اپنی محفلوں کی سرگرمیوں کو جاری رکھیں۔ ڈاکٹرم ق سلیم نے کہا کہ ہمارا شہر ہردورمیں اپنی شعری وادبی سرگرمیوں کیلئے متحرک رہا ہے۔ ہمارے شہر کے قلمکاروں کو شعری وادبی انجمنوں کے ذمہ داروں سے ربط پیدا کرتے ہوئے اپنی بہترین تخلیقات کوپیش کرنا چاہئے۔ اردو تہذیب کے ہرگوشہ پر نظررکھنے کی ضر ورت ہے تاکہ سازگار ماحول میں محفلیں جاری رہیں۔ اس محفل میں سینئرشاعر صلاح الدین نیئر کوراج کوی کی حیثیت سے حکومت نے جواعزاز بخشا ہے اس کے تسلسل میں جناب آصف پاشاہ نے صلاح الدین نیئرکوایوارڈ دیا۔اس محفل میں اردواکیڈیمی کا ترانہ پیش کیاگیا اور اس ترانہ سے ادبی اجلاس کا آغاز ہوا۔ اس محفل کے انعقاد کے سلسلے میں بہترین معاون کی حیثیت سے جناب محسن خان کی خدمات کوفراموش نہیں کیاجاسکتا۔ڈاکٹرسید حبیب امام قادری (مدیر تاریخ دکن) نے اس تقریب کے سلسلے میں خدمات انجام دیں۔ یہ صاف ستھری محفل شعروادب ڈاکٹرمختاراحمدفردین اورڈاکٹرمظفرعلی ساجد کے اظہارتشکر کے بعداختتام کوپہنچی۔ ڈاکٹرمختاراحمدفردین نے اپنے ہم خیال دوستوں کے تعاون سے محفل آراستہ کرنے میں دلچسپی رکھتے ہیں۔ ادبی اجلاس ومشاعرہ سے قبل شہر کے نامورفوٹو گرافرس کی خدمات کے اعتراف میں انہیں ایوارڈس اور تہنیت پیش کی گئی۔ اس طرح یہ شاندار تقریب کا اختتام عمل میں آیا۔ میزبان محفل جناب عظمت بیابانی نے بھی اپنے تعاون سے خدمات انجام دیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close