بین الاقوامی

ایشیاءکی امیر ترین خاتون اپنی آدھی سے زیادہ دولت سے ہاتھ دھو بیٹھی

بیجنگ: ایشیا ءکی امیر ترین خاتون یانگ ہوئیان چین کے رئیل سٹیٹ کے شعبے میں آنے والے بحران کی وجہ سے ایک سال کے عرصے میں اپنی آدھی سے زیادہ دولت سے ہاتھ دھو بیٹھیں۔

رپورٹ کے مطابق یانگ ہوئیان کے آدھی سے زیادہ دولت سے محروم ہونے کا یہ انکشاف بلومبرگ بلینیئرز انڈیکس میں کیا گیا ہے۔ اس انڈیکس میں بتایا گیا ہے کہ چین کی پراپرٹی ٹائیکون یانگ ہوئیان کے پاس 1 سال قبل 23ارب 70کروڑ ڈالر کی دولت تھی جو اب 52فیصد کم ہو کر 11ارب 30کروڑ ڈالر رہ گئی ہے۔

 

یانگ ہوئیان کنٹری گارڈن نامی رئیل سٹیٹ کمپنی کی اکثریتی شیئرہولڈر ہیں۔ انہیں گزشتہ دنوں اس وقت بڑا دھچکا لگا جب گوانگ ڈونگ کی اس کمپنی کنٹری گارڈن کے ہانگ کانگ میں رجسٹرڈ حصص کی قیمت 15فیصد گر گئی اور کمپنی کی طرف سے اعلان کر دیا گیا کہ وہ نقد رقم حاصل کرنے کے لیے نئے حصص فروخت کرے گی۔

چینی میڈیا کے مطابق یانگ ہوئیان کو یہ دولت وراثت میں ملی تھی۔ ان کے والد ینگ گوکیانگ ، جو کنٹری گارڈن کے بانی ہیں، نے 2005ءمیں اپنے حصص یانگ ہوئیان کو منتقل کر دیئے تھے۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button