ہندوستان اردو ٹائمز

کورونا سے بگڑتے حالات پرسپریم کورٹ کی ریاستوں کو پھٹکار کہا سیاست نہیں صورتحال کو بہتر بنانے کیلئے کام کریں

نئی دہلی،28نومبر(آئی این ایس انڈیا) سپریم کورٹ نے کورونا کے بگڑتے حالات پر ریاستوں کی سرزنش کی ہے۔ عدالت نے مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ ریاستوں کی طرف سے کورونا انفیکشن کے لئے ٹھوس اقدامات نہ اپنانے کی وجہ سے پچھلے تین ہفتوں میں صورتحال مزید خراب ہوگئی ہے، اگرچہ مرکزی حکومت نے اپنے جواب میں عدالت کو بتایا کہ حکومت صورتحال پر مستقل نگاہ رکھے ہوئے ہے اور صورتحال سے نمٹنے کے لئے مستقل ہدایات جاری کررہی ہے لیکن ریاستوں کی جانب سے ان رہنما اصولوں پر عدم تعمیل کی وجہ سے حالت یہاں تک پہنچ گئی۔
اپنے حلف نامے میں مرکز نے سپریم کورٹ کو بتایا کہ کووڈ 19 میں 10 ریاستوں میں تقریبا 77 فیصد سرگرم معاملات ہیں جبکہ مہاراشٹر اور کیرالہ میں کل سرگرم معاملات میں سے 33 فی صد معاملات ہیں۔ حلف نامے میں کہا گیا ہے کہ دنیا کے بیشتر ممالک میں کووڈ 19 کے معاملات ایک بار پھر عروج پر ہیں اور ہندوستان کی گنجان آبادی کو دیکھتے ہوئے اس ملک نے انفیکشن کے پھیلاؤ کو روکنے میں ایک قابل ذکر کام کیا ہے۔ مرکز نے کہا کہ 24 نومبر تک ہندوستان میں کووڈ 19 کے 92 لاکھ کیسز تھے، جن میں 4.4 لاکھ سے زیادہ فعال معاملات تھے۔