اہم خبریں

ڈی این اے ٹیسٹ ثابت کرے گا کہ بیوی بے وفاہے یا نہیں:الہ آبادہائی کورٹ

ہمیر پور18نومبر(آئی این ایس انڈیا) اترپردیش میں ایک چونکا دینے والا معاملہ سامنے آیا ہے۔ جہاں تین سال کی طلاق کے بعدعورت نے ایک بچے کوجنم دیاہے۔ خاتون نے دعویٰ کیاہے کہ بچہ اس کے شوہر سے ہے۔ جبکہ شوہر نے واضح طور پر اس کی تردید کی ہے ۔ جبکہ اس کا تین سال سے اس کی بیوی سے کوئی رشتہ نہیں تھا۔ہمیر پور میں مقیم اس جوڑے کی فیملی کورٹ میں3 سال قبل طلاق ہوگئی تھی۔ اس معاملے میں ، شوہر رام آسارے نے فیملی کورٹ میں درخواست دائرکی جس میں ڈی این اے ٹیسٹ کا مطالبہ کیا گیا۔ لیکن اس کی درخواست کو فیملی عدالت نے مسترد کردیا۔ اس کے بعد یہ معاملہ الہ آباد ہائی کورٹ پہنچا۔جہاں الہ آباد ہائی کورٹ کے جسٹس ویوک اگروال کی سنگل بنچ نے کیس کی سماعت کی اور ایک اہم فیصلہ سناتے ہوئے حکم دیاکہ ڈی این اے ٹیسٹ سے ثابت ہوسکتا ہے کہ اہلیہ بے وفاہے یا نہیں۔ہائی کورٹ نے کہاہے کہ ڈی این اے ٹیسٹ یہ ثابت کرنے کا بہترین طریقہ ہے کہ آیا رام آسارے بچے کا باپ ہے۔دراصل طلاق کے تین سال بعد ، بیوی نے ایک بچے کو جنم دیا۔ بیوی نے دعویٰ کیاہے کہ بچہ اس کے شوہر رام آسارے کا ہے۔ جبکہ شوہر نے بیوی کے ساتھ جسمانی تعلقات رکھنے کی صاف انکار کر دیا۔ درخواست گزارنیلم نے ہمیر پور کی فیملی کورٹ کے حکم کو بھی چیلنج کیا۔ جس کے بعد ان کے شوہر رام آسارے نے فیملی کورٹ میں ڈی این اے ٹیسٹ کے لیے درخواست دائرکی۔ جسے اس وقت عدالت نے مستردکردیا تھا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close