اہم خبریں

راہل گاندھی کے وایناڈ سیٹ سے الیکشن کو چیلنج کرنے والی درخواست سپریم نے کیاخارج

نئی دہلی،02 ؍نومبر( آئی این ایس انڈیا ) کانگریس کے سابق صدر راہل کے وایناڈ الیکشن کو منسوخ کرنے کے لئے درخواست کو سپریم کورٹ نے خارج کردیا ہے۔ سپریم کورٹ نے درخواست گزار کی جانب سے بار بار پیش ہونے اور بحث نہ کرنے پر درخواست خارج کردی۔ اہم بات یہ ہے کہ کیرالہ سولر اسکیم معاملے کے ملزم سریتا نائر نے وایناڈ انتخابی حلقہ سے راہل گاندھی کے انتخاب کو چیلنج کیا تھا۔ کیرالہ ہائی کورٹ کی جانب سے عرضی خارج ہونے کے بعد یہ عرضی سپریم کورٹ میں دائر کی گئی تھی۔سریتا نے ریاست میں کانگریس کے مختلف رہنماؤں پر سنگین الزامات لگائے۔ انہوں نے راہل گاندھی پرالزام لگایا تھا کہ انہوں نے کئی مواقع پر اس سلسلے میں ان کے خط کونظرانداز کیا۔ درخواست میں سریتا نے کہا ہے کہ ان کی پرچہ نامزدگی کوامیٹھی کے ریٹرننگ آفیسر نے قبول کیا ہے جبکہ وایناڈ میں اسے مسترد کردیا گیا ۔ درخواست گزار نے مطالبہ کیا کہ راہل کا انتخاب کالعدم قرار دیا جائے۔ دراصل کیرالہ کے مشہور سولر معاملے کے اہم ملزم سریتا ایس نائر نے ریاست کی واینا ڈ سیٹ سے کانگریس کے صدر راہل گاندھی کے خلاف بطور آزاد امیدوار پرچہ نامزدگی داخل کی تھی لیکن ان کی نامزدگی کو ریٹرننگ آفیسر نے اس بنیاد پر مسترد کردیا تھا کہ ایک عدالت نے انہیں تین سال کے لیے سولر گھوٹالہ معاملے میں مجرم قرار دیا تھا اور 10000 روپے جرمانہ عائد کیا گیا تھا۔ اہم بات یہ ہے کہ کیرالا میں مشہور سولر گھوٹالہ میں سریتا ایس نائر اہم ملزم ہے۔ سریتا نے ریاستی کانگریس کے متعدد تجربہ کار رہنماؤں پر جنسی ہراساں کرنے سمیت عصمت دری کا الزام عائد کیا ہے۔ شمسی اسکینڈل کے تحت اس کے پاس 28 فوجداری مقدمات درج ہیں۔ سریتا پر اصل الزام یہ ہے کہ اس نے اپنے ایک ساتھی کی مدد سے ایک جعلی کمپنی بنائی، پھر اس کمپنی کے ذریعہ سولر پینل اور اپنا لائسنس حاصل کرنے کے نام پر ریاست بھر کے لوگوں کو دھوکہ دیا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close