اہم خبریں

سپریم کورٹ سے ریپبلک ٹی وی کوراحت نہیں ملی،ہائی کورٹ جانے کامشورہ

نئی دہلی15اکتوبر(آئی این ایس انڈیا) ٹی آر پی گھوٹالہ کیس میں ریپبلک ٹی وی کی درخواست کی سماعت سے انکار کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے جمعرات کودرخواست گزار کو بمبئی ہائی کورٹ جانے کو کہاہے۔ جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ ، جسٹس اندو ملہوترا اور جسٹس اندرا بنرجی کی بنچ نے کہاہے کہ وہ اس عرضی پر سماعت نہیں کریں گے ۔اس کے لیے ٹی وی چینل کوہائی کورٹ جانا چاہیے۔یہ عرضی ای آر جی آؤٹلیر میڈیا پرائیوٹ لمیٹڈ اور ریپبلک ٹی وی کے ایڈیٹر ان چیف ارنب گوسوامی نے دائرکی ہے۔ درخواست میں ٹی آر پی گھوٹالہ میں ری پبلک کے افسران کو جاری کردہ سمن کو چیلنج کیا گیا ہے۔ اس عرضی میں مہاراشٹر حکومت کے علاوہ ممبئی پولیس کمشنر پرمبیر سنگھ ، کندیولی پولیس اسٹیشن کے ایس ایچ او ، ممبئی کرائم برانچ ، ہانسا ریسرچ گروپ اور حکومت ہندکوفریق بنایاگیاہے۔عدالت نے درخواست گزاروں سے سوال کیاہے کہ وہ پہلے بمبئی ہائی کورٹ کیوں نہیں گئے؟ عدالت نے کہاہے کہ ہائی کورٹ نے پہلے ہی معاملے پر قابو پالیا ہے۔ ہائی کورٹ کے بغیراس پٹیشن پر غور کرتے ہوئے پیغام یہ ہوگا کہ ہمیں ہائی کورٹس پراعتمادنہیں ہے۔سماعت کے دوران جسٹس چندرچوڑ نے کہاہے کہ درخواست گزار کا دفتر ورلی میں ہے۔ جہاں تک فلورا فاؤنٹین آپ سے ہے ، وہاں بمبئی ہائی کورٹ ہے۔ لہٰذاآپ بمبئی ہائی کورٹ جاسکتے ہیں۔ عدالت نے کہاہے کہ سی آر پی سی کے تحت تفتیش کا سامنا کرنے والے کسی بھی عام شہری کی طرح آپ کو بھی ہائی کورٹ جانا چاہیے۔اس کے بعد ری پبلک ٹی وی نے سپریم کورٹ سے اپنی درخواست واپس لے لی ہے۔ تاہم جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ نے ممبئی پولیس کمشنرپرمویر سنگھ کے انٹرویو کا بھی ذکر کیا۔ انہوں نے کہاہے کہ ہمیں کمشنرپولیس کے انٹرویودینے کے رجحان کے بارے میں تشویش ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close