اہم خبریں

متنازعہ زرعی قوانین کی منسوخی ہی واحد حل

وزیرزراعت کے بیان پرکانگریس برہم ،استعفیٰ مانگا

نئی دہلی 10جون(ہندوستان اردو ٹائمز) کانگریس نے بدھ کے روزمرکزی وزیر زراعت نریندر سنگھ تومر سے ایک بیان پراستعفیٰ دینے کا مطالبہ کیا ہے جس میں کہاگیاہے کہ کسانوں کے احتجاج سے متعلق مسئلے کا تینوں زرعی قوانین منسوخ کرناہی واحدحل ہے۔اہم بات یہ ہے کہ تومرنے منگل کے روزمدھیہ پردیش میں کہاتھاکہ حکومت زرعی قوانین کے خاتمے کے علاوہ مشتعل کسانوں کے ساتھ دوسرے متبادل پر بات کرنے کے لیے تیارہے۔ کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے ہیش ٹیگ کے ساتھ ٹویٹ کیا ہے اوریہ دعویٰ کیاہے کہ کسانوں کی تحریک کے دوران 500 کسان ہلاک ہوگئے ہیں ۔کسان ملک اور ملک کے دفاع میں مر چکے ہیں ، لیکن کسان خوفزدہ نہیں ، آج بھی وہ سچے ہیں۔

پارٹی کے چیف ترجمان رندیپ سورجے والانے تومر کے بیان کے بارے میں کہاہے کہ کسان بھیک نہیں مانگتا ، وہ انصاف چاہتا ہے۔ کسان کو انا کی نہیں حقوق کی ضرورت ہے۔ تکبر کے تخت سے نیچے آئو، ، تکبر ترک کرو ، تینوں کالے قوانین کو ختم کرنا ہی واحد راستہ ہے۔کانگریس کی ترجمان شپریہ شولے نے دعویٰ کیاہے کہ تومر کا بیان مرکزی حکومت اور وزیر اعظم نریندر مودی کے متکبرانہ موقف کی عکاسی کرتا ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close