اہم خبریں

حکومت کاحلف نامہ عدالت پہونچنے سے پہلے میڈیاکوکیسے مل گیا؟سپریم کورٹ کاسخت سوال ، سرکار نے کہا،ریاستوں سے گڑبڑی ہوئی ہوگی،عدالت ناراض

سرکار نے کہا،ریاستوں سے گڑبڑی ہوئی ہوگی،عدالت ناراض،سماعت جمعرات تک ملتوی

نئی دہلی 10مئی(ہندوستان اردو ٹائمز) پیر کو سپریم کورٹ میں انتخابات ، کمبھ اور آکسیجن کی فراہمی جیسے 21 مقدمات کی سماعت ہوئی۔ جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ نے ان بیانات پر حکومتی بیان حلفی میڈیا تک پہنچنے پر برہمی کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہاہے کہ مرکزی حکومت اتوار کی رات دیر گئے حلف نامہ لے کر سپریم کورٹ پہنچی۔ ہمیں پیر کی صبح دس بجے ملا ، لیکن یہ رات کو میڈیا تک پہنچا۔سالیسیٹر جنرل تشارمہتا نے عدالت میں صفائی دی۔انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنے حلف نامے ریاستوں کو بھی بھیجے ہیں۔ وہاں سے کوئی گڑبڑ ضرور ہوئی ہوگی۔

انھوں نے اسے ریاست پرڈال دیا۔ عدالت نے کہاہے کہ ہم ویکسینیشن اور ہسپتال کی پالیسی سے متعلق مرکز کا حلف نامہ پڑھیں گے۔ اس کے بعد عدالت نے سماعت جمعرات تک کے لیے ملتوی کردی۔اس سے قبل مرکزی حکومت نے اتوارکے روز سپریم کورٹ میں ایک حلف نامہ داخل کیا تھا۔ اس میں مرکزی حکومت نے کہا ہے کہ کورونا سے بچاؤکے لیے ویکسینیشن بہترین آپشن ہے۔ یہ کوروناسے لڑنے کی طویل مدتی حکمت عملی ہے۔مرکز نے کہا ہے کہ ہم ویکسی نیشن میں اضافے پر تیزی سے توجہ دے رہے ہیں۔ ویکسین کی قیمت بھی ایک بڑا مسئلہ ہے۔ اس کو کم کرنے کے لیے مرکزی حکومت ملک کے ساتھ ساتھ دنیا بھر میں بھی کوششیں کر رہی ہے۔ ویکسی نیشن پروگرام میں کمزور طبقات پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close