اہم خبریں

جے این یو طلبہ لیڈر صدر ایشی گھوش کے خلاف دو ایف آئی آر درج

سرور روم میں توڑ پھوڑ کا الزام ، طلبہ یونین نے الزام کی تردید کی

نئی دہلی۔ ۷؍جنوری: جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) میں طلبہ پرحملہ معاملے کو دو دن گزر چکے ہیں۔پولیس ایکشن میں تو ہے، لیکن ابھی تک طالب علموں پر حملہ کرنے والے فسادیوں کی گرفتاری نہیں ہو پائی ہے۔اس دوران پولیس نے جے این یو طلبہ یونین صدر آیشی گھوش سمیت 19 پر ایف آئی آر درج کی ہے،ان پر توڑپھوڑکرنے اور مار پیٹ کے الزام لگے ہیں۔جے این یو میں نقاب پوش دہشت گردوں کے تشدد کے بعد جے این یو طلبہ یونین صدر ایشی گھوش پر دہلی پولس نے دو ایف آئی آر درج کی ہے۴؍جنوری کو جے این یو سرور روم میں توڑ پھوڑ اور سیکوریٹی گارڈوں پر حملہ کرنے کے الزام میں ۱۹؍ لوگوں کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ واضح رہے کہ ۵؍جنوری کو جے این یو کیمپس میں نقاب پوش دہشت گردوں کے حملوں میں ایشی گھوش زخمی ہوگئی تھیں۔ طلبہ یونین صدر اور دیگر طلبہ پر جے این یو انتظامیہ کی شکایت کے بعد دہلی پولس نے ایف آئی آر درج کی ہے، ان میںسبھی طلبہ پر ۴؍جنوری کو سرور روم میں توڑ پھوڑ کرنے اور موجود سیکوریٹی گارڈ سے مارپیٹ کرنے کا الزام ہے۔ جے این یو انتظامیہ نے پانچ جنوری کو شکایت کی تھی جس کے بعد یہ ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ یونیورسٹی انتظامیہ نے دعویٰ کیا ہے کہ کچھ طلبہ جمعہ کو سرور روم میں گھس کر توڑ پھوڑ اور مواصلات کے نظام کو خراب کردیا تھا، اس کے بعد ٹیکنیکل اسٹاف نے کسی طرح سرور روم میں کی گئی خرابی کو ٹھیک کیا تھا لیکن اس کے بعد سنیچر کو دوپہر قریب ایک بجے کچھ طلبہ واپس آئے اور یہاں انہوں پھر سے اسے خراب کردیا اور دوبارہ توڑ پھو کی، سرور روم میں خرابی کو دوپہر چار بجے ٹھیک کیاجاسکا۔ الزام ہے کہ اسی دن گارڈ سے بھی مارپیٹ کی گئی، ادھر جے این یو طلبہ یونین کے نائب صدر ساکیت مون نے الزام لگایا ہے کہ کچھ طلبہ کو چن چن کر نشانہ بنایاجارہا ہے ۔ انہوں نے سرور روم میں توڑ پھوڑ کی واردات میں ملوث ہونے سے انکار کیا ہے، طلبہ یونین کا دعویٰ ہے کہ انتظامیہ نے کچھ نقاب پوشوں کے ذریعے سرور روم میں خرابی کروائی او رطلبہ پر حملہ بھی کروایا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close