اہم خبریں

ہاردک پٹیل گرفتار: عوام کے لئے آواز اٹھانے والوں کو پریشان کر رہی بی جے پی : پرینکا گاندھی

ہاردک پٹیل کی گرفتاری پر کانگریس کی جنرل سیکریٹری پرینکا گاندھی نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نوجوانوں کے لئے آواز اٹھانے والے ہاردک پٹیل کو بی جے پی کی طرف سے نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔
احمدآباد ۔ 19 جنوری 2019
گجرات میں احمدآباد کی ایک عدالت کی جانب سے غیر ضمانتی وارنٹ جاری ہونے کے بعد کانگریس میں شامل ہو چکے پاٹیدار آرکشن آندولن کمیٹی کے سابق کنوینر ہاردک پٹیل کو گزشتہ روز پولس نے گرفتار کر لیا۔ ان کی گرفتاری پر کانگریس کی جنرل سیکریٹری پرینکا گاندھی نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نوجوانوں کے لئے آواز اٹھانے والے ہاردک پٹیل کو بی جے پی کی طرف سے نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

Priyanka Gandhi Vadra

@priyankagandhi
युवाओं के रोजगार और किसानों के हक की लड़ाई लड़ने वाले युवा हार्दिक पटेल जी को भाजपा बार-बार परेशान कर रही है। हार्दिक ने अपने समाज के लोगों की आवाज उठाई, उनके लिए नौकरियां मांगी, छात्रवृत्ति मांगी। किसान आंदोलन किया।
भाजपा इसको "देशद्रोह” बोल रही है।https://www.amarujala.com/…/congress-leader-hardik-patel-ha… …
देशद्रोह मामले में कांग्रेस नेता हार्दिक पटेल फिर गिरफ्तार
गुजरात में पाटीदार आंदोलन में प्रमुख भूमिका निभाने वाले व वर्तमान में कांग्रेस नेता हार्दिक पटेल को शनिवार को फिर

کانگریس کے جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے ٹویٹ کیا، ’’نوجوانوں کے روزگار اور کسانوں کے حقوق کے لئے لڑنے والے ہاردک پٹیل کو بی جے پی پریشان کررہی ہے۔ ہاردک نے اپنے طبقہ کے لوگوں کو آواز اٹھائی، ان کے لئے نوکریاں طلب کیں، وظائف مانگے۔ کسان تحریک چلائی۔ اس کو بی جے پی ’بغاوت‘ قرار دے رہی ہے۔‘‘
ہاردک پٹیل کو ہفتہ کے روز گجرات کے احمد آباد ضلع کے ویرگرام تعلقہ سے 2015 کے غداری کے مقدمے میں گرفتار کیا گیا تھا۔ وارنٹ جاری ہونے کے چند گھنٹوں بعد ہی انہیں گرفتار کرلیا گیا۔ پیشی کے بعد عدالت نے انہیں 24 جنوری تک عدالتی تحویل میں بھیج دیا۔
اسسٹنٹ پولس کمشنر راج دیپ جھالا نے یو این آئی کو بتایا کہ ہاردک کو احمدآباد ضلع کے ویارمگام تعلقہ، جو ان کا آبائی علاقہ بھی ہے، کو ہانسل پور چوراہے سے گرفتار کرلیا گیا۔ انہوں نے آج رات کرائم برانچ کی لاک اپ میں رکھا جائے گا اور کل چھٹی کا دن ہونے کی وجہ سے جج کی رہائش گاہ پر پیش کیا جائے گا۔واضح رہے کہ عدالت نے سماعت کے دوران مسلسل غیر حاضری کی وجہ سے وارٹ جاری کیا ہے۔
یہ معاملہ 25 اگست 2015 کو یہاں جی ایم ڈی سی میدان میں ہوئے بڑے پاٹیدار آرکشن حامی ریلی کےبعد پوری ریاست میں توڑپھوڑ اور تشدد کےسلسلے میں یہاں کرائم برانچ نےاسی سال اکتوبر میں معاملہ درج کیا تھا۔ اس میں کئی سرکاری بسیں، پولس چوکیوں اور دیگر سرکاری جائیدادوں میں آگ لگائی گئی تھی اور اس دوران پولس اہلکاروں سمیت درجن بھر لوگ مارے گئے تھے جن میں کئی پولس فائرنگ کے وجہ سے مارےگئےتھے۔ پولس نے چارج شیٹ میں ہاردک اور ان کےحامیوں پر منتخب حکومت کو گرانے کےلئےتشدد پھیلانے کی سازش رچنے کا الزام لگایا تھا۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close