اہم خبریں

کانگریسی لیڈر نے روی شنکر پرساد کے خلاف استحقاق کی خلاف ورزی کا نوٹس دیا

ترووننت پورم۔۳؍جنوری: کیرالا اسمبلی میں نئے متنازعہ شہریت قانون (سی اے اے) کے خلاف قرارداد منظور ہونے کو لے کر روی شنکرنے بیان دیا تھا۔انہوں نے کہا کہ اس پر قانون پاس کرنے کا حق صرف پارلیمنٹ کو ہے، اسمبلی کو نہیں۔مرکزی وزیر کے اس بیان کو لے کرسابق وزیراور کانگریس کے رکن اسمبلی کے سی جوزف نے جمعہ کو ان کے خلاف استحقاق خلاف ورزی کا نوٹس دیا۔جوزف نے کیرالہ اسمبلی کے اسپیکر پی شریرامکرشن کو نوٹس دیا۔کے سی جوزف نے کہا کہ مرکزی وزیر کا تبصرہ کیرالا اسمبلی کے استحقاق کی خلاف ورزی ہے۔انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر کا تبصرہ بے بنیاد تھا، مرکزی وزیر نے ایک قرارداد منظور کرنے کے لئے اسمبلی پر سوال اٹھایا ہے۔انہوں نے کہا کہ اسمبلی کو تجویز پاس کرنے کی طاقت فراہم ہے ۔بتا دیں کہ مرکزی وزیر قانون روی شنکر پرساد نے کیرل اسمبلی میں منگل کو نئے شہریت قانون (سی اے اے) کے خلاف جاری تجویز کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی اسمبلی کو ایسا کرنے کا حق نہیں ہے۔مرکزی وزیر نے کہا کہ آئین میں مرکزی حکومت اور ریاستی حکومت کے درمیان اختیارات کی تقسیم ہے اور اس کے تحت شہریت قانون مرکزی حکومت کے دائرہ اختیار میں آتا ہے۔انہوں نے کہا کہ آئین کی یونین کی فہرست کے موضوعات میں 17 ویں مقام پر شہریت کا حوالہ دیتے ہوئے، ایسے میں شہریت قانون پر صرف پارلیمنٹ ہی قانون بنا سکتی ہے، کسی اسمبلی کو ایسا کرنے کا آئینی حق نہیں ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close