اہم خبریں

جامعہ معاملے میں منگل کو سماعت،بشرطیکہ تشدد رکے

نئی دہلی،16دسمبر(یواین آئی)سپریم کورٹ جامعہ ملیہ اسلامیہ اور علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں ہوئے مبینہ بربریت کی کارروائی کی شکایت کے سلسلے میں منگل کو سماعت کرےگا،بشرطیکہ تشدد رکے۔
سینئر وکیل اندرا جے سنگھ نے جامعہ اور اے ایم یو میں ہوئے واقعات کا چیف جسٹس ایس اے بوبڑے،جسٹس بی آر گوئی اور جسٹس سوریہ کانت کی بینچ کے سامنے واضح کیا۔
محترمہ جے سنگھ نے سپریم کورٹ سے کہا کہ انہیں اس معاملے میں نوٹس لیناچاہئے۔انہوں نے کہا کہ یہ پورے ملک میں ہورہی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔
جسٹس بوبڑے نے کہا،’’ہم حقوق کا تعین کریں گے لیکن فسادات کے ماحول میں نہیں،یہ سب بند ہوجانا چاہئے اور پھر ہم اس پر خود نوٹس لیں گے۔ہم حقوق اور پرامن مظاہروں کے خلاف نہیں ہیں۔‘‘
سینئر وکیل کولین گونسالوز نے کہا،’’عدالت کے ایک ریٹائرڈ جج کو جامعہ معاملے کی جانچ کرنی چاہئے۔‘‘جب ایک وکیل نے عدالت سے کہا کہ ان کے پاس معاملے سے متعلق ویڈیو ہیں تو چیف جسٹس نے کہا،’’ہم کوئی ویڈیو نہیں دیکھنا چاہئے۔اگر پبلک پراپرٹی کا نقصان اور تشدد جاری رہا تو ہم اسے نہیں سنیں گے۔‘‘
انہوں نے کہا،’’یہ معاملہ تشدد رکنے کے بعد 17دسمبر کو سنا جائےگا۔انہوں نے دہلی پولیس کو ہدایت دی ہے کہ وہ امن و قانون سنبھالے۔‘‘اس کے ساتھ ہی سی جے آئی نے واضح طورپر کہا،’’اگر کسی بھی طرح کا تشدد ہوا تو ہم پھر آپ کے لئے کچھ نہیں کریں گے۔‘‘

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close