اہم خبریں

لاک ڈاؤن میں نماز کے لئے جمع ہوئی بھیڑ، روکنے گئی پولیس ٹیم پر حملہ، دو سپاہی زخمی

بہرائچ،22مئی(آئی این ایس انڈیا) کورونا وائرس کے خطرے کو دیکھتے ہوئے لاک ڈاؤن میں مندراور مساجد تمام بند ہیں۔ان حالات میں جمعہ کو بہرائچ کے حضورپور تھانے کے کٹکا مروٹھا میں چھوکر مسجد میں قریب 15-20 نماجی نماز کے لئے گئے۔پولیس کے سپاہیوں نے جب انہیں روکا تو ان لوگوں نے انہیں پر حملہ کر دیا۔پولیس نے ملزمان کے خلاف سنگین دفعات میں مقدمہ درج کیا ہے۔دراصل پولیس نے اس مسجد کے پاس پہلے ہی دو سپاہیوں رام پرویش اور ونے کی ڈیوٹی لگائی تھی،نماز کے لئے بھیڑ جمع ہوتی دیکھ کر دونوں سپاہیوں نے نماز پڑھنے سے منع کیا اور نام نوٹ کرنے لگے، اس کو لے کر دونوںفریق کے درمیان کہا سنی ہو گئی،وہاں موجود لوگوں اور کچھ خواتین نے سپاہیوں کے اوپر حملہ کر دیا،جس سے انہیں چوٹیں آئی ہیں۔سپاہیوں نے مدد کے لئے حضورپور تھانے کو اطلاع دی،کچھ ہی دیر میں بڑی تعداد میں پولیس فورس گاؤں پہنچ گئی۔،9 مردوں اور 4 خواتین کو پوچھ گچھ کے لئے حراست میں لیا گیا ہے۔واقعہ کی معلومات ملنے پر ایس پی وپن کمار مشرا نے جائے حادثہ کا جائزہ لیا۔پولیس نے حضورپور تھانے میں تعزیرات ہند کی دفعہ 147،149، 323، 504، 506، 332، 353، 336، 188، 270، 278، وبا ایکٹ، ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کیا ہے۔پولیس نے اس میں اتاء اللہ خاں سمیت 10 سے 12 نامعلوم افراد کو ملزم بنایا ہے۔اس کے علاوہ 10 نامزد حملہ آوروں کے خلاف کارروائی کی گئی ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close