ہندوستان

مایاوتی یوگی کے دفاع میں آئیں،کانگریس پرنشانہ

نئی دہلی22مئی(آئی این ایس انڈیا) کوروناوائرس کی وجہ سے ملک بھر میں جاری لاک ڈاؤن کے درمیان کئی ریاستوں میں پھنسے یوپی تارکین وطن کو واپس اپنے ریاست واپس لانے کے لیے اتر پردیش کی حکومت نے سینکڑوں بسیں چلائیں۔راجستھان کے کوٹہ میں اب بھی بہت سے طلبہ-طالبات پھنسے ہوئے ہیں اور انہیں واپس بلانے کو لے کر دونوں ریاستوں میں تلخی جاری ہے۔ اسی معاملے پرراجستھان کی کانگریس حکومت پر یوپی کی سابق وزیراعلیٰ اور بہوجن سماج پارٹی کی سربراہ مایاوتی نے ٹویٹ کرکے زوردارحملہ بولاہے اورایک طرح سے یوگی حکومت کی طرفداری کی ہے۔

مایاوتی نے اپنے سرکاری ٹوئٹر اکاؤنٹ پرایک ٹویٹ کیاہے۔اس میں انھوں نے کہاہے کہ راجستھان کی کانگریسی حکومت کی طرف سے کوٹہ سے تقریباََ 12000 لڑکے اورلڑکیوں کو واپس ان کے گھر بھیجنے پر ہوئے اخراجات کے طور پر یوپی حکومت سے 36.36 لاکھ روپے اور دینے کاجومطالبہ کیا ہے وہ اس کی کنگالی اور غیرانسانیت کودکھاتاہے۔ دوپڑوسی ریاستوں کے درمیان ایسی گھنونی سیاست انتہائی غلط ہے۔انہوں نے اگلے ٹویٹ میں لکھاہے کہ لیکن کانگریسی راجستھان حکومت ایک طرف کوٹہ سے یوپی کے طالب علموں کو اپنی کچھ بسوں سے واپس بھیجنے کے لیے کرایہ وصول رہی ہے تو دوسری طرف ابھی تارکین وطن محنت کشوں کو یوپی میں ان کے گھربھیجنے کے لیے بسوں کی بات کرکے جوسیاسی کھیل کر رہی ہے یہ کتنا مناسب اور کتنا انسانی ہے؟۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close