اہم خبریں

۱۵؍ اضلاع آج رات سے مکمل طورہوں گے سیل

ایک سال تک ممبران اسمبلی کی تنخواہوں میں 30 فیصد کی کٹوتی

لکھنؤ ؍ 8اپریل( آئی این ایس انڈیا ) یوپی میں کرونا تیزی سے پھیلتا جا رہا ہے۔ انفیکشن سے نمٹنے کے لئے وسائل جمع کرنے کی خاطر ممبران اسمبلی کی تنخواہ ایک سال تک کے لئے روک دی گئی ہے۔ ان کی تنخواہ میں30 فیصد کمی بھی کی گئی ہے۔ محکمہ صحت کے مطابق بدھ کی صبح میرٹھ میں دو اور آگرہ میں دو متاثرین ملے۔ اس کے ساتھ ریاست میں متاثرہ مریضوں کی تعداد بڑھ کر 343 تک پہنچ گئی ہے۔ ادھر حکومت نے آج رات 12 بجے سے 13 اپریل تک کرونا متاثر 15 اضلاع کو مکمل طور پر سیل کرنے کا فیصلہ کیا ہے. ان میں لکھنؤ، آگرہ، غازی آباد، گوتم بدھ نگر، کانپور، وارانسی، شاملی، میرٹھ، بریلی، بلند شہر، فیروز آباد، مہاراج گنج، سیتاپور، بستی اور سہارنپور شامل ہیں۔ 13 اپریل کو جائزہ لینے کے بعد آگے کا فیصلہ کیا جائے گا ۔ ان اضلاع میں اب لوگوں کو گھروں سے نکلنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ صرف میڈیا، طبی اہلکار اور پولیس اہلکاروں کو ہی گھر سے نکلنے کی اجازت ہو گی۔وبا سے نمٹنے کے لئے مرکزی حکومت کے بعد یوگی حکومت نے بھی ایک سال کے لئے اراکین اسمبلی کی تنخواہ میں 30 فیصد کمی اور ایک سال کے لئے رکن اسمبلی فنڈ ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یوگی آدتیہ ناتھ نے بدھ کو ویڈیوکانفرنسنگ کے ذریعے کابینہ کے اجلاس کی۔ اس دوران ایم ایل اے فنڈ اور تنخواہ میں کمی کی تجویز پر بحث ہوئی۔2020-21 کے ممبر اسمبلی فنڈ کا استعمال کرونا سے تحفظ کیلئے حفاظتی کٹ، ادویات، علاج اور ہسپتالوں میں وسائل بڑھانے پر کیا جائے گا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close