آئی پی ایل

آئی پی ایل کے کھلاڑی بھی کورونا سے خوفزدہ، تین آسٹریلوی کرکٹرز وطن روانہ، کیا آئی پی ایل ہوجائے گا ملتوی ؟ جانیں یہاں

آئی پی ایل ، 26 اپریل 2021 (ہندوستان اردو ٹائمز) ہندوستان میں کورونا کی روز بروز بگڑتی صورت حال نے انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) میں شریک غیر ملکی کھلاڑیوں کو بھی تشویش میں مبتلا کر دیا ہے۔
خبر رساں ایجنسی کے مطابق آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والے فاسٹ بولر اینڈریو ٹائی انڈیا میں کورونا کیسز میں اضافے کے بعد لیگ چھوڑ کر واپس آسٹریلیا روانہ ہو گئے ہیں۔
ان کا کہنا ہے کہ ’انہیں امید ہے کہ مزید آسٹریلوی کرکٹرز بھی ان کی پیروی کرتے ہوئے آئی پی ایل چھوڑ کر وطن واپس آجائیں گے۔‘

ذرائع کے مطابق اینڈریو ٹائی کے بعد مزید دو آسٹریلوی کرکٹرز بھی کورونا کی ابتر صورت حال کے باعث آئی پی ایل چھوڑ گئے ہیں۔ اس کے بعد منتظمین پر ایونٹ ملتوی کرنے کے لیے دباؤ بڑھ گیا ہے۔

 روزانہ تین سے ساڑھے تین لاکھ کیسز اور تقریباً تین ہزار ہلاکتوں کے باوجود آئی پی ایل کو جاری رکھنے پر تنقید کی جارہی ہے۔

آئی پی ایل کی فرنچائز رائل چیلنجرز بینگلور نے ٹویٹ کی کہ ’ایڈم زمپا اور کین رچرڈسن ذاتی وجوہات کی بنا پر آسٹریلیا واپس لوٹ رہے ہیں اور وہ ایونٹ کے باقی میچز کے لیے دستیاب نہیں ہوں گے۔‘

ذرائع کے مطابق اینڈریو ٹائی جو آئی پی ایل میں راجستھان رائلز کی نمائندگی کر رہے تھے، اتوار کو ممبئی سے براستہ دوحہ سڈنی روانہ ہوئے۔

اینڈریو ٹائی کے مطابق وہ آئی پی ایل میں ’ببل لائف کے دباؤ‘ اور آسٹریلیا کی سرحد بند ہونے کے خدشے کے پیش نظر آئی پی ایل چھوڑ کر آگئے ہیں۔‘

آسٹریلوی ریڈیو ایس ای این سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ’میں نے سوچا کہ مجھے جلد گھر پہنچ جانا چاہیے اس سے پہلے کہ میں ملک سے باہر بند ہو جاؤں۔‘

انہوں نے بتایا کہ ’میرا خیال ہے کہ گذشتہ سال اگست سے اب تک میں صرف 11 روز اپنے گھر پر اور ببل کی زندگی سے باہر رہا ہوں۔

اینڈریو ٹائی نے بتایا کہ ’یقیناً کھلاڑیوں میں تشویش پائی جاتی ہے، کئی کھلاڑی مجھ سے رابطے میں ہیں، ان میں سے کچھ کو اس بات میں بہت دلچسپی تھی کہ میں کون سے رُوٹ سے وطن واپس گیا ہوں۔‘

حالانکہ اس وقت بھی آسٹریلیا کے صف اول کے کئی کھلاڑی موجود ہیں جن میں سٹیو سمتھ، ڈیوڈ وارنر اور پیٹ کمنز شامل ہیں۔

یاد رہے کہ ہندوستان میں اتوار کو بھی تقریباً ساڑھے تین لاکھ ریکارڈ نئے کورونا کیسز سامنے آئے۔ دارالحکومت نئی دہلی سمیت ملک بھر کے ہسپتال کورونا کے مریضوں سے بھر چکے ہیں اور ملک میں آکسیجن کی شدید قلت پیدا ہوچکی ہے۔

امریکہ کی جان ہاپکنز یونیورسٹی کے مطابق انڈیا میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد ایک کروڑ 69 لاکھ 60 ہزار سے زائد ہوچکی ہے جبکہ ایک لاکھ 92 ہزار 300 سے زائد افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

دوسری جانب آسٹریلیا نے اپنی سرحدیں بند کر کے اور سنیپ لاک ڈاؤن لگا کر کافی حد تک کورونا کی وبا پر قابو پا لیا ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close