عجیب و غریب

او مائی گاڈ! ڈکیتی کی رپورٹ درج کرانے والا خود ہی ڈاکو نکلا

رائے پور ،23جنوری (ہندوستان اردو ٹائمز) چھتیس گڑھ کے درگ ضلع کے د ھمدہا تھانہ علاقے میں درگ پولیس نے 5 لاکھ روپے کی ڈکیتی کا معاملہ حل کر لیا ہے۔ کیس میں ملزمان وہی شخص مجرم نکلا جس نے رپورٹ درج کرائی تھی۔ جس نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر ڈکیتی کی جھوٹی شکایت درج کرائی تھی۔ اس کے بعد وہ پولیس کو گمراہ کر رہا تھا۔ پولیس نے ملزمان کے قبضے سے 17 لاکھ روپے کی نقدی اور سامان سمیت دو سوئفٹ کاریں ضبط کر لی ہیں۔

درگ پولس کے ہاتھوں پکڑے گئے یہ تینوں ملزم وہی ہیں جنہوں نے 19 جنوری کو دھمدہا تھانہ علاقہ میں ڈکیتی کی جھوٹی واردات کی من گھڑت کہانی تیار کی تھی۔ دراصل 18 جنوری کی رات دلشاد علی سوئفٹ کار میں سوار ہو کر رائے پور سے خیر گڑھ گئے تھے۔ ڈی بورڈ ہونے کے بعد اشوک بردیا سے رائے پور کے پراپرٹی ڈیلر یوراج ورما کو 5 لاکھ روپے دینے کے لیے روانہ ہوا۔ لیکن 19 جنوری کو دلشاد نے تھانے پہنچ کر شکایت درج کروائی کہ تھیلکا چوک پر دو نامعلوم ڈاکوؤں نے نقدی سمیت کار لوٹ لی۔ اس کے بعد جب پولیس نے تفتیش شروع کی۔

چنانچہ تفتیش میں معلوم ہوا کہ ملزم نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر ڈکیتی کی جھوٹی رپورٹ درج کرائی تھی۔اس معاملہ کا انکشاف کرتے ہوئے درگ کے ایس پی ابھیشیک پالو نے کہا کہ ملزم دلشاد نے اپنے ساتھیوں سکندر اور صفات خان کے ساتھ مل کر یہ کہانی گڑھی تھی۔ خیرگڑھ سے واپس آنے کے بعد اس نے دھمدھا تھانہ علاقہ کے تھیلکا چوک کے پاس ڈکیتی کی جھوٹی شکایت درج کرائی۔ اس کے بعد جب تفتیش شروع کی گئی اور ملزمان سے پوچھ گچھ کی گئی۔ چنانچہ انہوں نے قبول کر لیا کہ ڈکیتی کی کہانی ان کی خود کی گھڑی ہوئی ہے ۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button