کشمیر

انجمن اصلاح المسلمین جموں کےزیراہتمام عظیم الشان سیرت النبی کانفرنس، مقررین کا ملی ومسلکی اتحاد پرزور

جموں (ہندوستان اردو ٹائمز) انجمن ِ اصلاح المسلمین جموں کے زیر اہتمام مکہ مسجد بٹھنڈی جموں میں عظیم الشان سیرت النبی کانفرنس کا اہتمام کیا جس میں ہزاروں کی تعداد میں فرزندان ِ توحید نے شرکت کی۔ دونشستوں پر مشتمل یک روزہ کانفرنس کا آغاز صبح10:30بجے ہوا۔ راجیہ سبھا ممبر انجینئر غلام علی کٹھانہ بطور خاص موجود تھے۔

پہلی نشست کی صدارت مہتمم دار العلوم رحیمیہ بانڈی پورہ اور مسلم پرسنل لاءبورڈ رکن مولانا رحمت اللہ میر قاسمی نے کی۔اس میں مہتمم جامعہ محمدیہ سیری خواجہ پونچھ مولانا عبداللہ حسین قاسمی اور علامہ سید غلام حسین رضوی نے خطاب کیا۔ انہوں نے سیرت طیبہ کے مختلف گوشوں کو اُجاگر کرتے ہوئے اپنی روزمرہ زندگی قرآن وحدیث کی روشنی میں گذارنے کی تاکید کی۔ انہوں نے کہاکہ پیغمبر آخر الزماں حضرت محمد ﷺ نے اپنے اعلیٰ کردار، حسن اخلاق، پیار ومحبت کی وجہ سے وہ مثال قائم کی جس کوئی نذیر نہیں ملتی۔ بظاہری طور اعلان ِ نبوت کرنے سے قبل انہوں نے اپنے کردار ، افعال کی وجہ سے امین المومنین اور صادقین کہلائے۔

علماءنے اگر ہم نبی پاک ﷺ کے بتائے ہوئے نقش ِ قدم پر چلیں اور چند باتوں پر ہی عمل کریں دنیا وآخرت میں کامیابی ہمارے قدم چومے گی۔ انہوں نے ہزاروں کی تعداد میں موجود اجتماع سے مخاطب ہوتے ہوئے کہاکہ وہ اِس بات کا عزم کریں کہ جھوٹ نہیں بولیں گے، امانت میں خیانت نہیں کریں گے، پڑوسیوں اور رشتہ داروں کے ساتھ اچھا سلوک کریں گے،

حسن سلوک کا مظاہرہ کریں گے۔ اپنے صدارتی خطاب میں مولانا رحمت اللہ میر قاسمی نے سیرت طیبہ کو انسانیت کی تعمیرقرار دیتے ہوئے کہاکہ موجودہ اسلامی معاشرہ میں مغربیت کا اثر زیادہ ہوگیا ہے ، دین سے دوری، اخلاقی اقدار کی گراوٹ کی وجہ سے ہم طرح طرح کی مشکلات کا شکار ہوگئے ہیں۔گھر بکھرتے جارہے ہیں، معاشرہ بدحالی اور انتشار کا شکار ہے۔ ذہنی وقلب کا سکون ختم ہوگیا ہے۔ انہوں نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ ہمارے نوجوان کا مستقبل تاریک ہو گیا ہے۔ہمارا نوجوان آج کہاںبھٹک گیا ہے۔وہ مساجد کی جانب مدعو نہیں ہوتا بلکہ خرافات کی جگہوں پر جانا پسند کرتا ہے ،کیونکہ گھروںمیںاسلام کا چلن نہیں ہے۔ہماری خواتین کی پوشاک ان کا بڑوںکے تئیںانداز بیان ہمدردی اور تعظیم کا رواج ہی مٹتا جا رہا ہے۔،

جبکہ اسلام نے دکان دار ،آفیسر ،مزدور ،ملازم اور ہر شعبہ سے تعلق رکھنے والے کےلئے ہدایات دی ہیں جن کو بھال دیا گیا ہے۔اسلئے وقت کی ضرورت ہے کہ ہم صحیح معنوںمیںاسلام کو اپنائیں۔نظامت کے فرائض سابقہ ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل ہائی کورٹ حسین احمد صدیقی نے انجام دیئے۔ اس موقع پر اصلاح المسلمین جموں صدر عبدالمجید، سابقہ ناظم اسکول تعلیم گلزار حسین قریشی، انجینئر رشید فانی،ایڈووکیٹ الطاف حسین جنجوعہ، سول سوسائٹی ممبران، بیروکریٹس، سیاسی وسماجی کارکنان، نوجوانوں کے علاوہ خواتین کی بھی کثیر تعداد موجود تھی۔ پہلی نشست نماز ظہر کو دعائیہ مجلس کے ساتھ اختتام پذیر ہوئی جس کے بعد ظہرانے کا بہترین انتظام کیاگیاتھا۔ دوسری نشست بعد نماز مغرب میں ہوئی، اُس میں بھی علماءنے سیرت طیبہ کے مختلف گوشوں پر مفصل روشنی ڈالی۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button