پٹنہ

امارت شرعیہ بزرگوں کی امانت،اس کا استحکام میرامنصبی فریضہ ہے: نائب امیرشریعت مولانا شمشاد رحمانی

آٹھویں امیر شریعت کے انتخاب کے لیے۸/اگست کی تاریخ ملتوی

پٹنہ (پریس ریلیز، ٢٩جولائی)امارت شرعیہ بزرگوں کی امانت اورملت کا صدسالہ سرمایہ ہے،اس کا استحکام اس کی وحدت اور اس کی عظمت ووقار کا خیال میرامنصبی فریضہ ہے،اس کی تعمیر وترقی اورفروغ ووسعت کی راہیں تلاش کرنا میری ذمہ داری ہے،جس سے کسی حال میں مفر نہیں،اپنی ساری توانائی اورصلاحیتیں صرف کرکے آگے بڑھانا میرااولین اورمقدم عزم اورمنصوبہ ہے،ان خیالات کا اظہار امارت شرعیہ بہار،اڈیشہ وجھارکھنڈ کے نائب امیر شریعت حضرت مولانا محمد شمشاد صاحب رحمانی قاسمی مدظلہ استاذ حدیث دارالعلوم وقف دیوبندنے اپنے ایک بیان میں کیا،انہوں نے فرمایا امارت شرعیہ سے منسلک ریاستوں کے مسلمانوں کے علمی،شرعی،تعلیمی اور معاشی مسائل کے حل کی طر ف باہم مل جل کر بڑھنا وقت کا تقاضہ ہے،اورامارت شرعیہ کے تمام کارکنان،اراکین،اورمخلصین ومحبین کوساتھ لیکر سماجی وملی منصوبوں کی تکمیل میری اولین ذمہ داری ہوگی۔

امارت شرعیہ کے ساتویں امیر شریعت مفکر اسلام حضرت مولانا سید محمد ولی رحمانی صاحب رحمۃ اللہ علیہ نے میرے کندھوں پر جو ذمہ داری دی ہے، میں ان ذمہ داریوں کو حتی الوسع پوری یکسوئی اوراخلاص کے ساتھ انجام دینا لازم سمجھتاہوں،ان کے وصال کے بعد آٹھویں امیرشریعت کا انتخاب اب تک ہوجانا تھا لیکن لاک ڈاؤن کی وجہ سے مجلس شوریٰ کی اجازت کے بعد اب تک یہ عمل انجام نہیں پاسکا، انتخاب امیر کے لیے ۸/اگست ۱۲۰۲ء کی تاریخ باہم مشورہ سے طے کردی گئی تھی او راس سمت میں اقدام بھی شروع ہوگئے تھے،لیکن بعض علاقوں مثلاً اڈیشہ،رانچی وغیرہ میں اتوار کو بھی لاک ڈاؤن رہنے اورکچھ ارکان شوریٰ وعاملہ کی طرف سے آنے والے مشورے کی وجہ سے اب یہ تاریخ ملتوی کی جاتی ہے،ان شاء اللہ آئندہ حالات کونظر میں رکھتے ہوئے حسب دستورانتخاب امیر کی کارروائی عمل میں لائی جائے گی،

انہوں نے کہا کہ میں امارت شرعیہ کے جملہ کارکنان،ذمہ داران،متوسلین ومحبین سے گذارش کرتاہوں کہ امارت کے جملہ کاموں کو باہمی اتحاد اورمضبوط عزم وحوصلہ کے ساتھآگے بڑھائیں اور تمام امور کی حسب سابق انجام دہی میں مشغول ہوجائیں،دینی مکاتب کے قیام،اردو کے فروغ کی تحریک اورنئے دارالقضاء کے قیام سمیت عصری تعلیمی اداروں کے قیام پر توجہ دیں،اضلاع و بلاک کی سطح پر جو کمیٹیاں تشکیل دی گئی تھیں اسے متحرک و فعال بنائیں،جہاں کمیٹیاں نہیں بنی ہیں وہاں کمیٹیاں بنائیں،اللہ تعالیٰ ہم سب کاحامی اور مددگار ہواورہمیں اخلاص عمل کی توفیق عطافرمائے۔آمین

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close