بین الاقوامی

افغانستان : قندوز میں اہل تشیع کی مسجد میں اندوہناک دھماکہ، ۱۰۰؍ ہلاک ، دیگر زخمی

کابل ؍اسلام آباد ، 8اکتوبر (ہندوستان اردو ٹائمز) افغانستان کے شمال مشرقی صوبہ قندوز کی ایک مسجد میں نماز جمعہ کے دوران دھماکے کے نتیجے میں ۱۰۰؍افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوگئے۔یہ دھماکہ امریکی فوج کے انخلا کے بعد یہ بدترین واقعہ ہے۔ خبر ایجنسی اے پی کی رپورٹ کے مطابق طالبان کے پولیس عہدیداروں نے بتایا کہ شمالی افغانستان کی ایک مسجد میں دھماکہ ہوا، جس میںکم سے کم 100 افراد جاں بحق ودیگر زخمی ہوئے۔قندوز کے ڈپٹی پولیس چیف دوست محمد عبیدہ کا کہنا تھا کہ دھماکہ کے باعث مسجد میں موجود بیشتر افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔ اس سے قبل طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ٹوئٹر پر جاری ایک بیان میں تصدیق کرتے ہوئے کہا تھا کہ دھماکا صوبہ قندوز کی ایک مسجد میں ہوا جس کے نتیجے میں اہلِ تشیع برادری سے تعلق رکھنے والے متعدد افراد جاں بحق اور کئی زخمی ہوگئے۔

انہوں نے بتایا تھا کہ طالبان فورسز کا اسپیشل یونٹ جائے وقوع پر پہنچ گیا ہے اور واقعہ کی تفتیش شروع کردی گئی ہے۔وزارت داخلہ کے ترجمان قاری سید خوستی نے دھماکہ کی تصدیق کی، تاہم اِس دھماکہ کی تفصیل نہیں بتائی۔ ڈاکٹرز ود آؤٹ بارڈرز کے ذرائع کا کہنا تھا کہ قندوز شہر میں ایک ہسپتال میں دھماکے میں ہلاک ہونے والے 15 افراد کی لاشیں لائی گئیں۔ نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر ہسپتال کے ایک ملازم نے کہا کہ ہمارے پاس 90 سے زائد زخمی اور 15 لاشیں آئی گئی ہیں ،لیکن تعداد تبدیل ہوسکتی ہے ،کیونکہ زخمیوں کی تعداد زیادہ ہے ۔اطلاعات کے مطابق غیر ملکی امدادی تنظیم کا ایک ملازم بھی زخمی ہوا ہے۔مقامی افراد کا کہنا تھا کہ دھماکہ مسجد میں جمعے کی نماز کی ادائیگی کے دوران ہوا، عینی شاہدین نے بتایا کہ جب دھماکے کی آواز آئی تو ہم نماز پڑھ رہے تھے۔

افغان نشریاتی ادارے ’خاما ‘پریس کے مطابق افغانستان میں طالبان کے کنٹرول سنبھالنے کے بعد سے صوبہ قندوز میں ہونے والا یہ پہلا دھماکہ ہے۔ دھماکے کی ذمہ داری تاحال کسی گروپ نے قبول نہیں کی، تاہم طالبان کے قبضے کے بعد داعش کی جانب سے حملوں میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔ اس سے قبل 3 اکتوبر کو افغانستان کے دارالحکومت کابل میں مسجد کے باہر دھماکے کے نتیجے میں 2 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے تھے۔بم دھماکہ کابل کی عیدگاہ مسجد کے دروازے کے قریب ہوا تھا ،جہاں طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کی والدہ کا تعزیتی اجلاس ہو رہا تھا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close