اشعار و غزل

سچ بولنے کی گر یہاں کوئی خطا کرے : از قلم :مولانا محمد جہانگیرعالم مہجورؔالقادری ،نوادہ

سچ بولنے کی گر یہاں کوئی خطا کرے
ہرلمحہ اس کو چاہئیے قیمت ادا کرے
پیہم گرا رہے ہیں نشیمن پہ بجلیاں
حالات کے ستم کوئی کب تک سہا کرے
لٹنے نہ دیں گے ہرگزہم آبرو وطن کی
فرعون وقت چاہے جوبھی جفا کرے
اے جامعہ کے طلباء! جذبہ تراسلامت
پائے ثبات میں نہ آئے لغزش خدا کرے
تم کام کوئی ایسا زمانے میں کر چلو!
کہ دشمن بھی تیرے جینے کی ہردم دعاکرے
اپنے وطن سے ہرگز فرقت نہیں گوارا
دشمن جو ہیں وطن کےرب اسے فنا کرے
آزادئ وطن میں ہے میرا لہو بھی شامل
گھس پیٹھئے کوئی بھی نہ ہرگز کہا کرے
مہجور کی رگوں میں خون علی رواں ہے
اب نہ امتحان صبر کا میرا کوئی لیا کرے

از قلم :مولانا محمد جہانگیرعالم مہجورؔالقادری ،نوادہ

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close