اشعار و غزل

غزل : امجد اثری مدھوبنی

                  غزل
کیوں وہ ہماری خواب میں آتانظر نہیں
لگتا ہے میرے پیار کا کوئی اثر نہیں
آئے نہ موت جس پہ کبھی وہ ہے بشرنہیں
عرصہ کی بات چھوڑ دو پل کی خبر نہیں
زندہ ہوں لاش بن گیا اب آبھی جاؤتم
کیا تم سے پیار کرنے کی کوئی ثمر نہیں
راہیں ہماری ہوگئی ہیں پر خطر مگر
اب بھی ہمارے ساتھ کوئی ہم سفر نہیں
انصاف جو بھی کرتے ہیں منصف جہان میں
ڈرتا ہے اپنے رب سے زمانے سے ڈر نہیں
اب بابری ہماری ہماری نہیں رہی
منصف ہمارے ملک کے اب معتبر نہیں
امجد  دیارِ عشق میں مدت گزر گئی
"عرصہ سے اس دیار کی کوئی خبر نہیں”
امجد اثری مدھوبنی
رابطہ ۔ 8434196911

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close