اشعار و غزل

غزل : زمیں پر آسماں تیرا اترنا اب ضروری ہے : محمد طیب برگچھیاوی سیتامڑھی

غزل

زمیں پر آسماں تیرا اترنا اب ضروری ہے
گھمنڈی ہو گیا ہے تو سدھرنا اب ضروری ہے

بہت تم نے دکھا دی اے سمندر اپنی طغیانی
تمہارا آکے ساحل پر بکھرنا اب ضروری ہے

جلا کر شہر وہ آرام سے بیٹھے ہیں گدی پر
سبھی ظالم کا گدی سے اترنا اب ضروری ہے

ہمیں نفرت کی ہر دیوار اب مسمار کرنی ہے
محبت میں ہمیں حد سےگذرنا اب ضروری ہے

تمہیں مرمرکےجینےکی کہیں عادت نہ ہو جائے
جگاؤ سوئے دل کو فکر کرنا اب ضروری ہے

ادب اخلاق تہذیب و ثقافت بیچ دی ہم نے
چمکتا کل اگر چاہو سنورنا اب ضروری ہے

چلو اب ساتھ ملکر آسماں پے گھر بناتے ہیں
سنو! طیب زمانے میں ابھرنا اب ضروری ہے

نتیجۂ فکر محمد طیب برگچھیاوی سیتامڑھی

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close