ارریہ

مولانااحمدولی فیصل رحمانی امیربننے کے سب سے زیادہ اہل: مولاناامجدبلیغ رحمانی

ارریہ5جون(ہندوستان اردو ٹائمز) امیرشریعت ایساہوناچاہیے جس میں تقویٰ ہو،جرأت ودوراندیشی بھی ہواورجنھیں عوامی مرجعیت بھی حاصل ہو۔ایسی شخصیت کاامیرکی حیثیت سے انتخاب امارت کے لیے مفیدہوگا۔یہ ساری باتیں خانقاہ رحمانی کے سجادہ نشیں حضرت مولانااحمدولی فیصل رحمانی میں پائی جاتی ہیں۔اس لیے ان کوہی امیربناناچاہیے۔

مولاناامجدبلیغ جوگبنی،ارریہ،رکن ارباب حل وعقدامارت شرعیہ نے مزیدکہاکہ میں پورے یقین کے ساتھ کہہ سکتاہوں کہ ان سے زیادہ متفق علیہ شخصیت ابھی کوئی نہیں ہے۔ان کے پاس لانباتعلیمی تجربہ ہے،رفاہی خدمت کاسلیقہ ہے،دشوارگزارحالات میں کیسے کام کیاجاتاہے،اس سے بھی خوب واقف ہیںاورسب سے بڑی بات وہ ایک دین دار،امانت دار،صالح جوان شخص ہیں اورایک ایسے برگزیدہ خاندان سے ان کاتعلق ہے جنھوں نے ہمیشہ امارت کی ترقی کی فکرکی،امارت کووقارواعتباربخشا،امارت کو ترقی کازینہ نہیں بنایا،بے لوث خدمت کی بلکہ جان کے ساتھ مال بھی امارت کی ترقی وسربلندی میں لگایا۔انھوں نے کہاکہ خانوادہ رحمانی کاملت پربڑااحسان ہے۔اس خانوادہ سے دوامیرشریعت بنے ہیں اوردونوں کاعہدعہدزریں کہلاتاہے۔امیدہے کہ تیسراامیربھی اس خانوادہ سے ہوگاتوامیرشریعت کے چھوڑے ہوئے کام پورے کیے جائیں گے اورامارت ملت کی فلاح وبہبودکے لیے بہترکام کرے گی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close